ایرانی صدر کی  ایرانی عوام کے خلاف تمام ظالمانہ پابندیاں ہٹانے پر تاکید

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر سید ابراہیم رئیسی نے روس کے صدر ولادیمیر پوتین کے ساتھ ٹیلیفون پر گفتگو میں ایرانی عوام کے خلاف تمام ظالمانہ پابندیاں ہٹانے پر تاکید کی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر سید ابراہیم رئیسی نے روس کے صدر ولادیمیر پوتین کے ساتھ ٹیلیفون پر گفتگو میں ایرانی عوام کے خلاف تمام ظالمانہ پابندیاں ہٹانے پر تاکید کی ہے۔

ایرانی صدر نے کہا کہ جس طرح ایران مذاکرات میں سنجیدہ ہے اسی طرح ایرانی عوام کے حقوق کے حصول میں بھی سنجیدہ ہے۔ اگر مذاکرات میں ایرانی عوام کے حقوق کو نظر انداز کیا جائے تو ایسےمذاکرات سے کوئي فائدہ نہیں ہے۔

صدر ابراہیم رئیسی نے کہا کہ ایران اور روس کے بہت سے بین الاقوامی مسائل میں مشترکہ نظریات ہیں دونوں ممالک یکطرفہ اقدامات کے خلاف اور مشترکہ اقدامات کے حامی ہیں۔

صدر رئیسی نے شام میں امریکی فوج کی غیر قانونی موجودگی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ شام ميں امریکہ کی موجودگی شامی حکومت اور شامی عوام کے خلاف کھلی جارحیت ہے۔

صدر رئيسی نے افغانستان میں داعش کی موجودگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں داعش کی موجودگی افغان عوام ، حکومت اور خطے کے لئے بہت بڑا خطرہ ہے اور ہميں اس خطرے کے بارے میں ہوشیار رہنا چاہیے۔

روس کے صدر پوتین نے بھی اس گفتگو میں ایران کے خلاف ظالمانہ پابندیوں کے خاتمہ پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ پرامن ایٹمی ٹیکنالوجی کا حصول ایرانی عوام کا حق ہے اور ہم ایرانی عوام کے حقوق کی حمایت کرتے ہیں۔ روسی صدر نے ایران کے ساتھ سیاسی، اقتصادی اور تجارتی شعبوں میں  تعلقات کو فروغ دینے پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ روس ایران کے ساتھ تمام شعبوں خاص طور پر کورونا کامقابلہ کرنے کے سلسلے میں تعاون جاری رکھنے کا پختہ عزم رکھتا ہے۔

News Code 1908860

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 9 =