بھارتی حکومت کا مسلمانوں کے ساتھ  منظم امتیازی سلوک کا سلسلہ جاری

انسانی حقوق کی تنظیم " ہیومن رائٹس واچ" نے کہا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کا مسلمانوں کے ساتھ منظم امتیازی سلوک کا سلسلہ جاری ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ انسانی حقوق کی تنظیم " ہیومن رائٹس واچ" نے کہا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کا مسلمانوں کے ساتھ  منظم امتیازی سلوک کا سلسلہ جاری ہے۔ ہیومن رائٹس واچ کے مطابق مودی حکومت نے ایسی پالیسیاں اور قوانین اختیار کیے ہیں جو مکمل طور پر مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کے خلاف امتیازی تصور کیے گئے ہیں۔ اس قسم کی منافقانہ اور دوگآنہ سیاست نے بھارت میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کے خلاف تشدد میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ حکومت کی ان منافقانہ پالیسیوں نے آزاد اداروں کو بھی اپنی گرفت میں لے لیاہے، جس کے تحت پولیس نے ہندو قوم پرست گروپوں کو مسلمانوں بالخصوص اقلیتوں کو دھمکیاں دینے، ہراساں کرنے اور ان پر حملے کرنے کے لئے بااختیار بنا دیا ہے۔ انسانی حقوق کی تنظیم (ہیومن رائٹس واچ) نے22 ستمبر کو امریکی کانگرس کو دی گئی بریفنگ میں کہا ہے کہ مودی حکومت مسلمانوں سے منظم امتیازی سلوک کررہی ہے۔ واضح رہے کہ بھارتی وزير اعظم مودی آج وہائٹ ہاؤس میں امریکی صدر جو بایڈن سے ملاقات اور گفتگو کریں گے۔

News Code 1908266

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 2 =