افغانستان میں طالبان کا مقابلہ کرنے کے لئے مسلح خواتین سڑکوں پر نکل آئی ہیں

افغانستان میں طالبان کا مقابلہ کرنے کے لئے خواتین میدان میں نکل آئی ہیں۔شمالی اور وسطی افغانستان میں مسلح خواتین نے مارچ کیا اور اپنی لڑنے کی صلاحیتوں کا عملی مظاہرہ کرکے دکھایا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے افغان ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ افغانستان میں طالبان  کا مقابلہ کرنے کے لئے خواتین میدان میں نکل آئی ہیں۔شمالی اور وسطی افغانستان میں مسلح خواتین نے مارچ کیا اور اپنی لڑنے کی صلاحیتوں کا عملی مظاہرہ کرکے دکھایا۔ اطلاعات کے مطابقغیر ملکی افواج کے انخلا کے بعد تیزی سے پیش قدمی کرتے ہوئے طالبان کیلئے نئی پریشانی کھڑی ہوگئی۔ مسلح افغان خواتین سڑکوں پر نکل آئیں۔

افغان میڈیا کے مطابق شمالی اور وسطی افغانستان میں مسلح خواتین نے مارچ کیا اور اپنی لڑنے کی صلاحیتوں کا عملی مظاہرہ کرکے دکھایا۔ خواتین کی جانب سے رائفلوں کے ساتھ اپنی تصاویر سوشل میڈیا پر بھی شیئر کی گئی ہیں۔ مسلح خواتین کی جانب سے طالبان کے خلاف سب سے بڑا مظاہرہ وسطی صوبہ غور میں کیا گیا ۔ یہاں سینکڑوں خواتین بندوقیں لہراتی اور طالبان مخالف نعرے لگاتی رہیں۔ 

غور میں خاتون عہدیدار حلیمہ پرستش کا کہنا تھا کہ مظاہروں میں شامل بعض خواتین ایسی تھیں جو محاذِ جنگ پر تو نہیں جاسکتیں لیکن وہ پھر بھی سکیورٹی فورسز کی حوصلہ افزائی کیلئے سڑکوں پر نکلیں۔ مظاہروں میں شامل متعدد خواتین ایسی بھی تھیں جو عملی طور پر طالبان کے خلاف لڑنے کیلئے تیار ہیں اور انہوں نے صوبائی گورنر کو اس سے آگاہ بھی کردیا ہے۔

News Code 1907295

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • captcha