چینی اخبار: پاکستان نے امریکہ کو اپنی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت دے دی

چينی اخبار نے سنسنی خیز انکشاف کرتے ہوئے لکھا ہے کہ پاکستان نے امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات کی بہتری کیلئے امریکی جنگی جہازوں کو طالبان کے خلاف افغانستان میں لڑنے والی فورسز کی مدد کیلئے اپنی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت دے دی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ڈیلی پاکستان نے چینی اخبار"ساؤتھ چائنہ مارننگ پوسٹ " کے حوالے سے سنسنی خیز انکشاف کرتے ہوئے لکھا ہے کہ پاکستان نے امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات کی بہتری کیلئے امریکی جنگی جہازوں کو طالبان کے خلاف افغانستان میں لڑنے والی فورسز کی مدد کیلئے اپنی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت دے دی ہے۔ اطلاعات کے مطابق  20 سال پرانے معاہدے کی تجدید نو کے بعد دیکھا گیا ہے کہ امریکہ کے جنگی طیاروں نے مئی کے پہلے ہفتے میں کم از کم ایک بار افغان صوبے ہلمند میں طالبان پر بمباری کی ہے۔ اس بارے میں پاکستان کے کئی صحافیوں نے سوشل میڈیا پر بھی بات کی ہے۔ پاکستانی صحافیوں کا کہنا ہے کہ امریکی فضائیہ کو پاکستان کی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت ایک ایسے وقت میں دی گئی ہے جب امریکہ نے شمسی ایئر بیس تک دوبارہ رسائی کی درخواست کی تھی۔ یہ ایئر بیس چین کے زیر انتظام گوادر کی بندرگاہ  سے 400 کلومیٹر شمال مغرب کی طرف واقع ہے۔ چینی اخبار نے اسلام آباد میں مقیم دو اعلیٰ ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی حکام نے مارچ میں اس وقت شمسی ایئر بیس کے استعمال کی اجازت مانگی تھی جب ان کی پاکستانی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات ہوئی تھی۔ امریکہ نے اسی عرصے کے دوران ازبکستان اور تاجیکستان سے بھی اڈے مانگے تھے تاکہ 11 ستمبر کو امریکی افواج کے انخلا کے بعد بھی افغانستان پر نظر رکھی جاسکے تاہم ازبکستان اور تاجیکستان دونوں نے امریکی درخواست مسترد کردی تھی۔ واضح  رہے کہ پاکستان کے سابق صدر پرویز مشرف نے امریکہ کو 2002 میں شمسی ایئر بیس کے ساتھ ساتھ جیکب آباد میں موجود بیس بھی استعمال کرنے کی اجازت دی تھی۔

News Code 1906755

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 2 =