غزہ پر اسرائیلی بمباری میں 2 ہزار گھر تباہ/ 15 کروڑ ڈالر سے زائد نقصانات

فلسطینی حکام نے کہا ہے کہ غزہ پر اسرائیل کی وحشیانہ بمباری میں 2 ہزار گھر تباہ ہوگئے جبکہ مجموعی طور پر نقصانات کا تخمینہ 15 کروڑ ڈالر سے زائد ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے اے پی کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فلسطینی حکام نے کہا ہے کہ غزہ پر اسرائیل کیو حشیانہ بمباری میں 2 ہزار گھر تباہ ہوگئے جبکہ مجموعی طور پر نقصانات کا تخمینہ 15 کروڑ ڈالر سے زائد ہے۔

اطلاعات کے مطابق غزہ ورکس اینڈ ہاؤسنگ وزارت کے ڈپٹی ناجی سرہان کا کہنا ہے کہ 11 روزہ جنگ میں 2 ہزار سے زائد رہائشی یونٹ جزوی یا مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں۔ ناجی سرہان نے بتایا کہ غزہ میں پولیس کے درجنوں دفاتر کے ساتھ 4 مساجد بھی تباہ ہوگئی ہیں۔  ان کا کہنا تھا کہ غزہ کے صنعتی زون میں زیادہ تر فیکٹریاں تباہ ہوچکی ہیں۔  انہوں نے بتایا کہ اسرائیلی بمباری سے ابتدائی طور پر لگائے گئے نقصان کا تخمینہ 15 کروڑ ڈالر ہے اور تاحال نقصانات کا تخمینہ لگایا جارہا ہے۔

دوسری جانب دی واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق فسلطینی حکام کی جانب تاحال اسرائیلی بمباری کی وجہ سے ہونے والے نقصان کا حتمی تخمینہ لگانا مشکل ہے لیکن یہ نقصان اربوں ڈالر پر مشتمل ہے۔

رپورٹ میں اقوام متحدہ کا حوالہ دے کر کہا گیا کہ اسرائیلی فضائی حملوں کے نتیجے میں 77 ہزار فلسطینی نقل مکانی پر مجبور ہوئے، 6 ہستال اور 11 ہیلتھ کیئر کلینکس تباہ ہوگئے۔  اسرائیلی حملوں سے غزہ کی پٹی کی مرکزی شاہراہیں تباہ ہوچکی ہیں جبکہ بجلی کے گرڈ کو بھی بری طرح نقصان پہنچا ہے جس کے بعد لوڈشیڈنگ کا دورانیہ طویل ہوگیا ہے۔

News Code 1906638

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 5 =