اسرائیل امن و صلح کی زبان نہیں بلکہ طاقت کی زبان سمجھتا ہے

شام کے صدر بشار اسد نے فلسطینی تنظیموں کے نمائندوں سے ملاقات میں کہا ہے کہ اسرائیل امن و صلح کی زبان نہیں بلکہ طاقت کی زبان سمجھتا ہے۔

مہر خبررساں ایجسی نے النشرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ شام کے صدر بشار اسد نے فلسطینی تنظیموں کے نمائندوں سے ملاقات میں کہا ہے کہ اسرائیل امن و صلح کی زبان نہیں بلکہ طاقت کی زبان سمجھتا ہے۔

شام کے صدر نے خطے میں اسرائیل کے ناجائز اور غیر قانونی وجود کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل خطے میں دہشت گردی اور بد امنی پھیلانے کا موجب بنا ہوا ہے۔

شام کے صدر بشار اسد نے فلسطین کے بارے میں شام کے دوٹوک اور ٹھوس مؤقف کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم فلسطینی عوام کے حقوق کی مکمل حمایت کرتے ہیں اور اسرائیلی حکومت کو غاصب اور ناجائز حکومت سمجھتے ہین۔ اس ملاقات میں فلسطینی تنظیموں کے نمائندوں نے امریکہ اور اسرائیل کے حمایت یافتہ داعش دہشت گردوں پر شامی حکومت کی کامیابی کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ شامی حکومت کی طاقت درحقیقت فلسطینیوں کی طاقت ہے فلسطینی نمائندوں نے فلسطینی عوام کی حمایت کرنے پر شامی حکومت اور شام کے صدر بشار اسد کا شکریہ ادا کیا۔

News Code 1906599

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 7 =