ایران اسلامی مزاحمت کے محور میں طاقتور ملک ہے/ اسرائیل داخلی بحران کا شکار

حزب اللہ لبنان کے سربراہ سید حسن نصر اللہ نے عالمی یوم قدس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران اسلامی مزاحمت کے محور میں سب سے طاقتور ملک ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے المنار کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ حزب اللہ لبنان کے سربراہ سید حسن نصر اللہ نے عالمی یوم قدس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران اسلامی مزاحمت کے محور میں سب سے طاقتور ملک ہے۔

سید حسن نصر اللہ نے کہا کہ فلسطینی اپنے حقوق کے حصول اور بیت المقدس کی آزادی  کے لئے جد وجہد میں مصروف ہیں اور ہم بھی ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

فلسطینیوں نے کبھی بھی اپنی سرزمین سے صرف نظر نہیں کیا بلکہ وہ اپنے وطن اور اپنے گھروں کی واپسی کے سلسلے میں بیشمار قربانیاں پیش کرچکے ہیں اور قربانیاں پیش کررہے ہیں، اور فلسطین کے موجودہ حالات اس بات کے گواہ ہیں۔

انھوں نے کہا کہ اسرائیلی تصور کرتے تھے کہ فلسطینی اپنے حقوق کے حصول کے سلسلے میں مایوس ہوجائیں گے  لہذا فلسطینیوں کا محاصرہ کیا اور ان پر اقتصادی پابندیوں کے ذریعہ دباؤ ڈالنے کی کوشش کی لیکن اس کے باوجود فلسطینی اپنے حقوق کے حصول کے لئے میدان میں موجود ہیں۔

سید حسن نصر اللہ نے کہا کہ فلسطینی اتحاد، یکجہتی ، استقامت اور پائداری کی صورت میں اپنے اہداف تک پہنچ جائیں گے کیونکہ آج اسرائيلی حکومت داخلی بحران کا شکار ہے اور اسرائیل کی اندرونی سطح پر تباہی کے آثار نمایاں ہوگئے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایران اسلامی مزاحمتی محور میں طاقتور ملک ہے جس نے خطے میں امریکہ اور اسرائیل کے تمام اندازوں کو غلط ثابت کردیا ہے۔

حزب اللہ لبنان کے سربراہ نے کہا کہ آج اسلامی مزاحمت پہلے کی نسبت کہیں زیادہ طاقتورہوگئی ہے جبکہ اسرائیل اندرونی طور پربحران کا شکار ہے۔ اسرائیل کو اندرونی مشکلات پر تشویش لاحق ہے۔ اسرائیل داخلی جنگ کی طرف بڑھ رہا ہے۔ دیمونا کے قریب میزائل حملہ ، حیفا کی تیل ریفائنری میں آک اور دیگر واقعات نے اسرائیل پر وحشت طاری کردی ہے۔ انھوں نے کہا کہ عالمی یوم قدس نے مسئلہ فلسطین کو زندہ جاوید بنادیا ہے اور ہم فلسطینیوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور فلسطینیوں کی حمایت اپنا مذہبی، دینی ، اخلاقی اور سیاسی فریضہ سمجھتے ہیں۔

News Code 1906420

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 8 =