امریکی دہشت گرد فوج کی افغانستان میں داعش اور القاعدہ کو دوبارہ فعال کرنے کی کوشش

امریکی دہشت گرد فوج کے کمانڈر سینٹرل کمانڈ (سینٹ کام) جنرل کیتھ فرینکلن میکنزی نے افغانستان میں داعش اور القاعدہ کی دوبارہ فعالیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں القاعدہ اور داعش کے دوبارہ فعال ہوسکتے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی دہشت گرد فوج  کے کمانڈر سینٹرل کمانڈ (سینٹ کام) جنرل کیتھ فرینکلن میکنزی نے افغانستان میں داعش اور القاعدہ کی دوبارہ فعالیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں القاعدہ اور داعش کے دوبارہ فعال ہوسکتے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق امریکہ دہشت گردوں تنظیموں کی تشکیل اور ان کی بھر پور حمایت کرکے اسلامی ممالک میں عدم استحکام پیدا کررہا ہے اور دہشت گردوں کو بہانہ بنا کر خطے میں اپنی غیر قانونی موجود کا جواز بھی پیدا کرتا ہے۔ امریکہ کی دہشت گرد فوج کے جنرل کا کہنا ہے کہ افغانستان میں القاعدہ اور داعش جیسی تنظیموں کے دوبارہ فعل ہوجانے کا امکان موجود ہے۔  اور ان کے فعال ہونے سے پاکستان اور دیگر علاقائی ممالک  کو بھی خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق امریکہ آج بھی دہشت گردوں کو پیشرفتہ ہتھیار فراہم کررہا ہے امریکہ شام اور عراق میں دہشت گردوں کی اعلانیہ مدد کرچکا ہے اور ترکی میں قائم دہشت گردوں کے کیمپوں میں انھیں تربیت بھی فراہم کرچکا ہے۔

News Code 1906275

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 8 =