کشمیر کی سابق وزیر اعلی محبوبہ مفتی کا حکومتی ایجنسیوں پر ڈرانے دھمکانے کا الزام

ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے مرکزی حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ تحقیقاتی ایجنسیوں جیسے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ، انکم ٹیکس اور سی بی آئی کو انہیں ڈرانے اور خاموش بٹھانے کیلئے استعمال کررہی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے کشمیر ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے مرکزی حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ  تحقیقاتی ایجنسیوں جیسے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ، انکم ٹیکس اور سی بی آئی کو انہیں ڈرانے اور خاموش بٹھانے کیلئے استعمال کررہی ہے۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ حکومت ہند پی ڈی پی کو توڑنے کے لئے اس کے ممبروں کو ڈرانے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے ان باتوں کا اظہار اپنے ٹویٹ میں کیا۔ محبوبہ مفتی نے لکھا کہ حکومت ہند پی ڈی پی کو توڑنے کے لئے اس کے ممبروں کو ورغلانے اور ڈرانے کی کوشش کر رہی ہے۔ تحقیقاتی ایجنسیوں جیسے ای ڈی کو مجھے ڈرانے کیلئے استعمال کیا جا رہا ہے۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ مجھے پاسپورٹ جیسے بنیادی حق سے بھی محروم رکھا جا رہا ہے۔یہ سیاسی انتقام نہیں تو اور کیا ہے لیکن ہم نہ خاموش بیٹھیں گے اور نہ خوفزدہ ہوں گے بلکہ پوری طاقت سے اپنی آواز اٹھائیں گے۔
  یاد رہے کہ سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی جمعرات کوانفورسمنٹ  ڈائریکٹوریٹ(ای ڈی) کے دفتر میں پیش ہوئی تھیں  جہاں منی لانڈرنگ کیس کے سلسلے میں ان سے قریب پانچ گھنٹوں تک پوچھ گچھ کی گئی۔پوچھ گچھ کے بعد دفتر کے باہر بھی  انہوں نے نامہ نگاروں  سے گفتگو کی تھی اور مرکزی حکومت پر سخت تنقید کی تھی۔ ذرائع کے مطابق محبوبہ مفتی نے خود بی جے پی کے ساتھ اتحاد قائم کرکے کشمیر کو تاریخی نقصان پہنچایا جس کا خمیازہ آج یہ تنظیم خود بھی بھگت رہی ہے۔

News Code 1905846

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 8 =