ایران اورچین نے 25 سالہ دستاویز پر دستخط کردیئے/ مختلف شعبوں میں تعلقات میں توسیع پر تاکید

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف اور چين کے وزیر خارجہ ونگ یی نے دونوں ممالک کے درمیان 25 سالہ تعاون پر مشتمل دستاویز پر دستخط کردیئے ہیں دونوں ممالک نے مختلف شعبوں میں مشترکہ تعاون کو فروغ دینے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف اور چين کے وزیر خارجہ ونگ یی نے دونوں ممالک کے درمیان 25 سالہ تعاون پر مشتمل دستاویز پر دستخط کردیئے ہیں دونوں ممالک نے مختلف شعبوں میں مشترکہ تعاون کو فروغ  دینے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔  ایران اور چین کے درمیان سیاسی، ثقافتی اور تجارتی شعبوں میں گہرے ، دوستانہ اور مضبوط تعلقات قائم ہیں۔ امریکہ کی اقتصادی پابندیوں کے باوجود ایران اور چین کے درمیان تجارتی اور سفارتی تعلقات بدستور قائم رہے ہیں۔ چين نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے سلسلے میں بھی اہم کردار ادا کیا ۔چین ایران کے تیل کا اہم خریدار ملک ہے۔

ایران کی بیرونی تعلقات کے سلسلے میں مشرقی بلاک  پر قریبی اور ترجیحی نگاہ ہے جس میں چین کو خاص اہمیت حاصل ہے۔چین کے وزیر خارجہ کے دورہ تہران کے دوران ایران اور چین کے درمیان 25 سالہ تعاون کی جامع سند پر بھی دستخط ہوگئےہیں۔ اس سند میں دونوں ممالک کے درمیان سیاسی، اقتصادی، ثقافتی ، پیداواراور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تعلقات کو فروغ دینے پر تاکید کی گئی ہے دونوں ممالک کے درمیان یہ جامع اور اسٹرٹیجک سند ہے۔ اس مشترکہ دستاویز کی داغ بیل چین کے صدر کے 6 سال قبل دورہ ایران کے دوران ڈالی گئی ہے۔ اس سفر میں دونوں ممالک کے اعلی حکام نے باہمی تعاون کو اسٹراٹیجک تعاون میں ترقی دی ، اس جامع اور مشترکہ دستاویز پر دستخط کرنے کے بعد چین اور ایران کے تعلقات  نئے مرحلے میں داخل ہوگئے ہیں۔ اس دستاویز کی بنا پر دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات، علاقائی امور اور بین الاقوامی مسائل میں مزید مضبوط ہوگئے ہیں۔ دونوں ممالک کے وزراء خارجہ نے مشترکہ اعلامیہ میں اس دستاویز کو دونوں ممالک کی اقوام اور خطے کے لئے مفید اور مؤثر قراردیا ہے۔

News Code 1905841

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 4 =