بھارت اور پاکستان کے درمیان سرحدی معاہدوں پر عمل درآمد کا خیر مقدم

ہندوستان کے زیر انتظام جموں کشمیر میں انجمن شرعی شیعیان کے صدر آغا سید حسن موسوی نے ہندوستان اور پاکستان کے درمیان سرحدی معاہدوں پر عمل در آمد کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ سرحدی علاقوں میں دونوں طرف سے گولہ باری کے نتیجے میں کافی جانی اور مالی نقصان ہوتا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ہندوستان کے زیر انتظام جموں کشمیر میں انجمن شرعی شیعیان کے صدر آغا سید حسن موسوی نے ہندوستان اور پاکستان کے درمیان سرحدی معاہدوں پر عمل در آمد کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ سرحدی علاقوں میں دونوں طرف سے گولہ باری کے نتیجے میں کافی جانی اور مالی نقصان ہوتا ہے۔

سید حسن موسوی نے مرکزی امامبارگاہ میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کے یکطرفہ  اقدامات سے کشمیر کی متنازعہ صورتحال پر کوئي اثر نہیں پڑےگا ۔  انھوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قرارداد میں ایک متنازعہ مسئلہ ہے جس کا پرامن حل تلاش کرنے کی ضرورت ہے، بھارت کے یکطرفہ اقدامات سے کشمیر بھارت کا حصہ نہیں بن سکتا۔

آغا سید حسن نے کہا کہ تنازعہ کشمیر کا پر امن حل خطے کے دائمی امن اور محفوظ مستقبل کے لئے بے حد ضروری ہے جنگ بندی معاہدے پر مکمل طور پر عمل در آمد کے لئے دونو ں ممالک کا عزم امید افزا ہے آغا صاحب نے کہا کہ بھارت اور پاکستان اگر خلوص نیت کے ساتھ باہمی تنازعات کے حل کے لئے سنجیدگی کا مظاہرہ کریں گے تو نہ صرف دونوں  ممالک کے درمیان روایتی دشمنی کی طویل تاریخ کا خاتمہ ہو سکتا ہے بلکہ اس خطے میں ہتھیاروں کی دوڑ کا بھی خاتمہ ہوگا اور تعمیر و ترقی کا ایک نیا دور شروع ہوگا اور عوام میں اقتصادی خوشحالی کا دور شروع ہوجائے گا۔

News Code 1905451

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 4 + 13 =