فرانسیسی وزارت خارجہ میں پاکستانی ناظم الامور طلب

فرانس کی وزارت خارجہ نے پاکستانی صدرعارف علوی کے مبینہ طور پر مسلمانوں کے خلاف قانون کے حوالے سے بیان پر احتجاج کے لیے پاکستانی سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے احتجاج کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ڈان کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فرانس کی وزارت خارجہ نے پاکستانی صدرعارف علوی کے مبینہ طور پر مسلمانوں کے خلاف قانون کے حوالے سے بیان پر احتجاج کے لیے پاکستانی سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے احتجاج کیا ہے۔ پاکستانی صدر عارف علوی نے ہفتہ کو مذہبی آزادیوں اور اقلیتوں کے حقوق کے حوالے سے بین الاقوامی کانفرنس کے اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے فرانس کی حکومت اور قیادت پر زور دیا تھا کہ وہ مسلمانوں کو گھیرے میں لینے والے طرز عمل اور قوانین سے گریز کرے کیونکہ اس طرح کے اقدامات سے نفرت اور تصادم کی شکل میں خطرناک نتائج سامنے آسکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فرانس کی حکومت اور قیادت کو چاہیے کہ وہ انتشار اور تعصب کو جنم دینے والے اقدامات کے بجائے عوام کو متحد رکھنے والے اقدامات کرے کیونکہ ایسا نہ کرنے سے جو نقصان ہوگا وہ برسوں پر محیط ہوگا۔

صدر کا کہنا تھا کہ فرانس میں ہونے والی قانون سازی اقوام متحدہ کے منشور اور یورپی معاشرے میں سماجی ہم آہنگی کی روح کے منافی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پورے مذہب کو لیبل کرنا اور پوری کمیونٹی کے خلاف معاندانہ اقدامات سے آنے والے برسوں میں خطرناک نتائج سامنے آسکتے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق فرانسیسی وزارت خارجہ نے کہا کہ اس نے پاکستانی ناظم الامور کو طلب کرکے صدرعارف علوی کے بیان پر ناراضی کا اظہار کیا اور کہا کہ قانونی بل میں کوئی امتیازی عنصر نہیں ہے۔

News Code 1905406

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 2 =