بھارت میں اتراکھنڈ کے چمولی علاقہ میں مزید 12 لاشیں برآمد/ 156 افراد اب تک لاپتہ

بھارتی صوبہ اتراکھنڈ کے چمولی میں گلیشیر پھٹنے سے ہونے والی تباہی کے آٹھویں دن مزید۱۲ لاشیں برآمد ہونے کے بعد اب تک۵۰ لاشیں برآمد کی جا چکی ہیں جبکہ ۱۵۶ افراد کا اب تک کوئی پتہ نہیں چلا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی صوبہ اتراکھنڈ کے چمولی میں گلیشیر پھٹنے سے ہونے والی تباہی کے آٹھویں دن مزید۱۲ لاشیں برآمد ہونے کے بعد اب تک۵۰ لاشیں برآمد کی جا چکی ہیں جبکہ ۱۵۶ افراد کا اب تک کوئی پتہ نہیں چلا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سرنگ کے اندرسےاتوار کو مزید۵ افراد کی لاش برآمد ہونے کے بعد لاپتہ افرادکے اہل خانہ کوبڑا جھٹکا لگا ہے جبکہ انتظامیہ اور پولیس فورس لا پتہ افراد کو کامیابی سے نکالنے کا دعویٰ کر رہے تھے لیکن ڈیولپمنٹ کی مشینیں تاخیر سے پہنچنے کے سبب کئی افراد کے زندہ رہنے کی اب کافی کم امید بچی ہے۔
 متاثرہ علاقے کا دورہ کرنے والے ڈیویژنل کمشنر روی ناتھ رمن نے بھی کہا ہے کہ سرنگ کے اندر پھنسے افراد کے زندہ بچنے کی امید کم  ہے لہٰذا بچاؤ کے کام میں سرگرم کارکنان کوجان جوکھم میں نہیں ڈالنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ رینی گاؤں میں ۶؍ لاش، سرنگ میں ۵؍ اور رودرپور میں ایک لاش برآمد ہوئی ہے۔اتوار کی دوپہر تک۱۲؍ لاشیں برآمد ہو چکی ہیں۔غور طلب ہے کہ گزشتہ ۷؍ فروری کو چمولی میں گلیشیر پھٹنےسے بڑی تباہی ہوئی تھی، اس حادثہ میں۲۰۰؍ سے زیادہ افراد لاپتہ ہوگئے تھے۔ذرائع کے مطابق جوشی مٹھ کے رینی تپوون علاقے میں گلیشیر ٹوٹنے سے آنے والی آفت میں لاپتہ افراد کی تلاش اور بچاؤ مہم مسلسل جاری ہے۔
 

News Code 1905291

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 8 =