آیات شیطانی کے مصنف سلمان رشدی ملعون کے بارے میں حضرت امام خمینی (رہ) کا تاریخي فتوی

حضرت امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ نے آیات شیطانی کے مصنف سلمان رشدی ملعون کےمرتد ہونے کے بارے میں تاریخي فتوی صادر کرکے اسلام کے خلاف دشمنوں کی گھناؤنی سازشوں کو ناکام بنادیا۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق حضرت امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ نے آیات شیطانی کے مصنف سلمان رشدی ملعون کےمرتد ہونے کے بارے میں تاریخي فتوی صادر کرکے اسلام کے خلاف دشمنوں کی گھناؤنی سازشوں کو ناکام بنادیا۔

حضرت امام خمینی (رہ) نے سن 1367 شمسی پیغمبر اسلام (ص) اور قرآن مجید کے خلاف سلمان رشدی کی کتاب آیات شیطانی کے خلاف بروقت فتوی صادر کرکے سلمان رشدی کو مرتد قراردیا اور اس کے قتل کو جائز قراردیا تھا ۔ حضرت امام خمینی (رہ) نے اس طرح اسلام اورقرآن مجید کے خلاف استعماری طاقتوں کی گھناؤنی سازش کا بر وقت مقابلہ کرتے ہوئے ناکام بنادیا۔

آیات شیطانی کے خلاف تمام اسلامی ممالک میں مسلمانوں نےاحتجاجات کئے اور سلمان رشدی کے بہیمانہ اقدام کی بھر پور الفاظ میں مذمت کی۔ سلمان رشدی ہندوستانی نژاد برطانوی شہری ہیں جو حضرت امام خمینی (رہ) کے فتوے کے بعد آج تک روپوش ہیں اور برطانوی سکیورٹی ایجنسیاں اس کی حفاظت پر مامور ہیں۔

حضرت امام خمینی (رہ) نے اپنے تاریخی فتوی میں تحریر کیا کہ " آیات شیطانی کتاب کے مصنف اور کتاب کے مندرجات سے آگاہ ناشر کو پیغمبر اسلام اور قرآن مجید کی توہین کے جرم میں قتل کرنا جائز ہے اور مسلمان ایسے شرپسند عنصر کو جہاں کہیں پائیں قتل کردیں تاکہ اس کے بعد کسی میں اسلام اور قرآن مجید کی توہین کرنے کی ہمت نہ رہے اور اس راہ میں جو بھی مارا جائےگا وہ شہید راہ خدا ہوگا۔"

News Code 1905255

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 16 =