مشترکہ ایٹمی معاہدے کو کسی ثالث کی ضرورت نہیں/ امریکہ کے عاقل ہونے میں رکاوٹ نہیں ڈالیں گے

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے کامل ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ تحریری شکل میں موجود ہے اور اس معاہدے کو کسی ثالث کی ضرورت نہیں ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ  نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے کامل ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ تحریری شکل میں موجود ہے اور اس معاہدے کو کسی ثالث کی ضرورت نہیں ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے انقلاب اسلامی کی کامیابی کی 42 ویں سالگرہ کے موقع پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی وزیر خارجہ نے سی این این کے ساتھ گفتگو میں مختلف امور میں ایران کے مؤقف کو بیان کیا اسی طرح عراق کے وزیر خارجہ کے دورہ تہران کے دوران مختلف علاقائي اور عالمی مسائل کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گيا۔ عراقی وزیر خارجہ کے ساتھ میجر جنرل شہید سلیمانی اور اس کے ساتھی شہیدوں کے بہیمانہ اور مجرمانہ قتل کے بارے میں کیس کو عالمی عدالت انصاف میں پیش کرنے کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا گيا اور دونوں ممالک کی سینٹرل بینکوں کے درمیان تعاون پر بھی بات چيت کی گئی۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے امریکی وزير خارجہ کی طرف سے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے بارے میں جلد اقدام نہ کرنے کے متعلق جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہم امریکہ کے عاقل ہونے کے بارے میں کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کریں گے اور جیسا کہ رہبر معظم انقلاب اسلامی نے امریکہ کے عملی اقدام کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں امریکہ کے الفاظ نہیں بلکہ اس کے عملی اقدام کا انتظار ہے ۔ امریکہ کو مشترکہ ایٹمی معاہدے کے بارے میں اپنے وعدوں پر عمل کرتے ہوئے ایران کے خلاف اقتصادی پابندیوں کو ختم کردینا چاہیے۔خطیب زادہ نے کہا کہ مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں امریکہ کی کچھ ذمہ د اریاں ہیں اور امریکہ کو اپنی ان ذمہ داریوں پر عمل کرنا چاہیے۔

خطیب زادہ نے ایران اور افغانستان کے تعلقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان اچھے اور خوشگوار تعلقات ہیں اور ایران افغانستان میں پائدار امن و صلح کا خواہاں ہے اور اس سلسلے میں ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کے لئے آمادہ ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ امریکہ کو سکیورٹی کونسل کی قرارداد 2231 کے مطابق اپنی ذمہ داریوں پر عمل کرنا چاہیے اور ایران کے خلاف اپنی تمام ظالمانہ پابندیوں کو ختم کردینا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ امریکہ کے ہمراہ تین یورپی ممالک نے بھی اپنے وعدوں پر عمل نہیں کیا اور وہ بھی امریکہ کے ساتھ اس جرم میں شریک ہیں۔

News Code 1905174

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 4 =