چين کا امریکی صدر جو بائیڈن کو سابق صدر ٹرمپ کی پالیسیوں سے سبق سیکھنے کا مشورہ

چین نے امریکہ کے نئے صدر جو بائیڈن کے ایک بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے انہیں سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسیوں کے نتائج سے سبق حاصل کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

 مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چین نے امریکہ کے نئے صدر جو بائیڈن کے ایک بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے انہیں  سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسیوں کے نتائج سے سبق حاصل کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

 اطلاعات  کے مطابق گزشتہ روز امریکی صدر کی جانب سے چین کے معاشی " استحصال "کو محدود کرنے کے جو بائیڈن کے بیان پر معمول کی پریس بریفنگ سے خطاب میں ردعمل ظاہر کرتے ہوئے چینی وزارت خارجہ کے ترجمان  لیجیان ژاؤ نے کہا  کہ امید کرتے ہیں امریکہ کی موجودہ انتظامیہ چین سے متعلق ٹرمپ حکومت کی غلط پالیسوں سے سبق حاصل کرے گی۔

ترجمان نے کہا  کہ ہمیں امید ہے  نئی حکومت دونوں ممالک کے تعلقات کو معروضی اور  دانش مندانہ انداز میں دیکھے گی، اس کی چین سے متعلق پالیسیاں تعمیری اور مثبت ہوں گی اور پائیدار ترقی کے لیے دونوں ممالک کے باہمی تعاون کو واپس درست راہ پر ڈالنے کے لیے اقدامات کیے جائیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز وائٹ ہاؤس سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا تھا کہ امریکہ اس بات پر نظر رکھے ہوئے ہے کہ گزشتہ چند برسوں سے چین داخلی طور پر زیادہ سخت ریاستی کنٹرول اور بیرون ملک سکیورٹی چیلنجز میں اضافہ کررہا ہے۔

News Code 1905001

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 10 =