ایران کا اقتصادی پابندیاں ختم نہ کرنے کی صورت میں اضافی پروٹوکول متوقف کرنے کا اعلان

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ اگر مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں ایران کے خلاف اقتصادی پابندیوں کو ختم نہ کیا گيا تو ایران اضافی پروٹوکول پرعمل در آمد متوقف کردے گا۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے روس کے وزير خارجہ سرگئی لاوروف کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں ایران کے خلاف اقتصادی پابندیوں کو ختم نہ کیا گيا تو ایران اضافی پروٹوکول پرعمل در آمد متوقف کردے گا۔

ایرانی وزیر خارجہ نے ایران اور روس کے درمیان باہمی تعاون کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہا کہ ایران اور روس کے باہمی تعلقات قدیمی اور قریبی ہیں اور دونوں ممالک نے انرجی کے شعبہ میں تعاون کو جاری رکھنے پر تاکید کی ہے۔ ایرانی وزیر خآرجہ نے کہا کہ ایران اور روس کے تعلقات کی مدت امریکہ کی عمر سے کہیں زیادہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ روس کے صدر ولادیمیر پوتین نے علاقہ میں استحکام پیدا رکنے کے سلسلے میں اہم نقش ایفا کیا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ اگر 21 فروری تک ایران کے خلاف پابندیاں ختم نہ کی گئیں تو ایران اضافی پروٹوکول پر عمل درآمد روک دےگا۔

اس پریس کانفرنس نے روس کے وزير خارجہ نے بھی کہا کہ ایران نے مشترکہ ایٹمی معاہدے پر عمل کیا اور تمام فریقین کو مشترکہ ایٹمی معاہدے میں کئے گئے اپنے وعدوں پر عمل کرنا چاہیے ۔ لاوروف نے کہا کہ اگر امیرکہ کی نئی حکومت مشترکہ ایٹمی معاہدے میں واپس آنا چاہتی ہے تو ہم اس کا استقبال کریں گے۔

News Code 1904990

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 8 =