شہید سلیمانی کے قتل کا انتقام یقینی ہے/ وقت اور جگہ کا انتخاب ایران کرےگا

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے نائب سربراہ نے کہا ہے کہ شہید میجر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا انتقام یقینی ہے لیکن اس کی جگہ اور وقت ایران معین کرےگا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگآر کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن  کے نائب سربراہ عباس مقتدائی نے کہا ہے کہ شہید میجر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا انتقام یقینی ہے لیکن اس کی جگہ اور وقت ایران معین کرےگا۔ عباس مقتدائي نے شہید سلیمانی کی پہلی برسی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ سید جمال الدین اسد آبادی اور ان جیسی دوسری شخصیتوں کی طرح شہید سلیمانی کو امت مسلمہ کے درمیان اتحاد اور یکجہتی کے علمبردار کے عنوان سے یاد کیا جائےگا۔

ایرانی پارلیمنٹ کی سلامتی اور خارجہ پالیسی کے نائب سربراہ نے کہا کہ جس طرح شہید سلیمانی کو ایرانی قوم ہیرو سمجھتی ہے اسی طرح انھیں مستقبل میں بھی نمایاں طور پر یاد رکھا جائےگا ۔ انھوں نے کہا کہ شہید سلیمانی در حقیقت ایکط رف خزد حضرت امام خمینی (رہ) کے مکتب کے شاگرد تھے اور دوسری طرف وہ خود دوسروں کے لئے بہترین اسلامی اور اخلاقی معلم تھے۔ عباس مقتدائی نے کہا کہ شہید سلیمانی کی عسکری، سیاسی، ثقافتی اور سماجی شعبوں میں خدمات کو یاد رکھا جائےگا اور ایرانی قوم شہید سلیمانی کے جہاد اور مقاومت  راستے پر گامزن رہےگی۔

News Code 1904614

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 3 =