اسرائیلی وزیراعظم کی مراکش کے بادشاہ کو اسرائیل کے دورے کی دعوت

مراکش کی طرف سے اسرائیل کو باقاعدہ تسلیم کرنے کے بعد اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے پہلی بار مراکش کے بادشاہ محمد ششم کے ساتھ ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور انہیں اسرائیل کے دورے کی دعوت دی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ مراکش کی طرف سے اسرائیل کو باقاعدہ تسلیم کرنے کے بعد اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے پہلی بار مراکش کے بادشاہ محمد ششم کے ساتھ ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور انہیں اسرائیل کے دورے کی دعوت دی ہے۔

اطلاعات کے مطابق نیتن یاہو اورمراکش کے  بادشاہ محمد ششم نے اس ٹیلیفونک گفتگو میں امریکی سرپرستی میں باہم ہونے والے امن معاہدے پر مزید پیشرفت کرنے اور دونوں ممالک کے تعلقات کو مزید نارمل کرنے پر تبادلہ خیال کیا۔

رواں ہفتے ایک آفیشل اسرائیلی وفد مراکش کے دورے پر پہنچا۔ اس وفد کی میزبانی پر وزیراعظم نیتن یاہو نے مراکشی بادشاہ کا شکریہ ادا کیا۔ اس گفتگو میں مراکشی بادشاہ نے بتایا کہ مراکش کی یہودی کمیونٹی اور بادشاہت کے درمیان کتنے قریبی تعلقات ہیں۔واضح رہے کہ امریکہ نے اس وقت اسرائیل کو بطور ملک تسلیم کرانے کے لیے ایک مہم شروع کر رکھی ہے جس میں اب تک متحدہ عرب امارات ، بحرین ، سوڈآن اور مراکش جیسے خائن  مسلمان ممالک اسرائیل کو تسلیم کر چکے ہیں اور اب سعودی عرب اور انڈونیشیاءمیں بھی اس معاملے پر بحث چل رہی ہے۔ عرب ممالک کے حکمرانوں کی طرف سے

News Code 1904548

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 4 =