بھارتی ریاست پنجاب میں کسانوں نے بی جے پی رہنماؤں کو فرار ہونے پر مجبور کردیا

بھارتی ریاست پنجاب میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی تقریب کے دوران احتجاج کرنے والے کسانوں نے ہوٹل کا محاصرہ کرلیا جس کے باعث پولیس نے بی جے پی کے رہنماؤں کو ہوٹل کے پچھلے دروازے سے فرار کروایا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے بھارتی میڈیا کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بھارتی ریاست پنجاب میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی تقریب کے دوران احتجاج کرنے والے کسانوں نے ہوٹل کا محاصرہ کرلیا جس کے باعث پولیس نے بی جے پی کے رہنماؤں کو ہوٹل کے پچھلے دروازے سے فرار کروایا۔

اطلاعات کے مطابق کسان یونین کے مظاہرین نے اس ہوٹل میں مظاہرہ کیا جہاں بی جے پی قائدین سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی کی سالگرہ منانے جمع ہوئے تھے۔ مظاہرین نے دعویٰ کیا کہ یہ ہوٹل ایک بی جے پی کارکن کی ملکیت ہے اور وہ ایک کمپنی کے بھی مالک ہیں جو مویشی اور مرغی کی خوراک کا بزنس کرتی ہے۔ کسانوں نے کہا کہ وہ اس کمپنی کی مصنوعات کا بائیکاٹ کریں گے۔ بھارتی کسان یونین کے نائب صدر کرپال سنگھ کی قیادت میں متعدد مظاہرین نے ہوٹل کے باہر احتجاج کیا اور بی جے پی قائدین اور کارکنوں کا گھیراؤ کیا جو کاشت کاروں کا احتجاج شروع ہونے سے پہلے ہی اندر داخل ہونے میں کامیاب ہوگئے تھے۔ پولیس نے بتایا کہ مظاہرین نے بی جے پی وومن ونگ  کی ضلعی صدر بھارتی شرما سمیت بی جے پی کے متعدد کارکنوں کو بھی ہوٹل کے اندر جانے سے روک دیا ۔ پولیس نے بتایا کہ جو لوگ اندر داخل ہوئے تھے انہیں پولیس سکیورٹی میں ہوٹل کے پچھلے دروازے سے ایک ایک کر کے باہر نکالنا پڑا تاکہ انہیں مظاہرین سے بچایا جا سکے۔ ان میں بی جے پی ضلعی اور مقامی عہدیدار شامل تھے۔ بھارتی ذرائع کے مطابق بھارتی کسانوں کا بھارتی جنتا پارٹی کی حکومت کے خلاف مظاہرہ جاری ہے۔

News Code 1904535

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 0 =