اسرائیل کی فلسطین میں عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹرس نے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی جارحیت پر متبنہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل کی فلسطین کی سرزمین پر تعمیرات اور توسیع عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے جس سے حالات مزید کشیدہ ہوجائیں گے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے فلسطین الیوم کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹرس نے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی جارحیت پر متبنہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل کی فلسطین کی سرزمین پر تعمیرات اور توسیع عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے جس سے حالات مزید کشیدہ ہوجائیں گے۔  اطلاعات کے مطابق اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹرس نے فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کے عالمی دن کے موقع پر ورچوئل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل مغربی کنارے کے الحاق کے لیے باضابطہ منصوبے کے تحت مقبوضہ علاقے میں یہودیوں کی آباد کاری میں توسیع کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

اقوام متحدہ کے جنرل سیکریٹری نے مزید کہا کہ اسرائیل کے عزائم تشویشناک ہیں، مغربی کنارے پر تعمیرات اور یہودی آبادکاریاں گزشتہ چار برسوں کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہیں جس سے مذاکرات کے ذریعہ تنازعہ کے حل کے امکانات کم ہوتے جا رہے ہیں جب کہ کورونا وائرس کی وبائی صورت حال نے پہلے سے انتہائی سنگین صورت حال کو مزید خراب کردیا ہے۔

انٹونیو گوٹرس نے مزید کہا کہ پر تشدد کارروائیاں، غزہ میں آزادانہ نقل و حمل پر پابندی، اشتعال انگیزی اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں جاری ہیں۔ اسرائیل کے توسیع پسندانہ اقدامات عالمی قوانین کے منافی ہیں جن سے فلسطینی ریاست کے قیام کے امکانات مجروح ہوجاتے ہیں۔ واضح رہے کہ اقوام متحدہ کے تحت ہر سال فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔ یہ دن منانے کے لیے اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں 2 دسمبر 1977 کو ایک قرارداد منظور کی گئی تھی اور تب سے یہ سلسلہ جاری ہے۔

News Code 1904196

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 8 =