نائیجر میں او آئی سی کے اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کے بارے میں پاکستان کی قرارداد منظور

نائیجر میں ہونے والے اسلامی تعاون تنظیم " او آئی سی" وزرائے خارجہ کونسل کے 47 ویں اجلاس میں پاکستان کی مقبوضہ کشمیر سے متعلق قرارداد منظور کرلی گئی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے جنگ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ نائیجر میں ہونے والے اسلامی تعاون تنظیم " او آئی سی"  وزرائے خارجہ کونسل کے 47 ویں اجلاس میں پاکستان کی مقبوضہ کشمیر سے متعلق قرارداد منظور کرلی گئی ہے۔ اطلاعات کے مطابق او آئی سی اجلاس میں مقبوضہ کشمیر اور اسلامو فوبیا پر پاکستان کی پیش کردہ قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔ او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل اجلاس کی قرار داد کے مطابق جموں و کشمیر تنازع 7 سے زائد دہائیوں سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ایجنڈے پر ہے۔

قرارداد میں بھارت کے 5 اگست 2019ء کے اقدامات کو مسترد کیا گیا ہے اور اس اقدام کو سلامتی کونسل کی قراردادوں کی براہ راست توہین قرار دیا۔

او آئی سی وزرائے خارجہ اجلاس کی قرارداد میں کہا گیا کہ بھارتی اقدامات کا مقصد مقبوضہ کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنا اوراستصواب رائے سمیت کشمیریوں کے دیگر حقوق چھیننا ہے۔

پاکستانی دفتر خارجہ کے مطابق قرارداد میں بھارت پر زور دیا گیا کہ اقوام متحدہ کے فوجی مبصر گروپ کا کردار لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے اطرف بڑھائے۔

او آئی سی وزارئے خارجہ کے اجلاس کی قراداد میں کہا گیا کہ اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں صورتحال کی نگرانی کرے۔

قرارداد میں کہا گیا کہ اقوام متحدہ کے نمائندہ خصوصی مقبوضہ کشمیر میں بے گناہ کشمیریوں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مسلسل نگرانی کرے اور سیکریٹری جنرل یو این کو آگاہ کرے۔

News Code 1904142

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 13 =