قومی دفاعی توانائي اور طاقت  کے بارے میں کسی سے مذاکرات نہیں کریں گے

رہبر معظم انقلاب اسلامی کے مشیر اور سابق وزير دفاع جنرل دہقان نے کہا ہے کہ ہم قومی دفاعی توانائي اور قدرت کے بارے میں کسی سے مذاکرات نہیں کریں گے

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق رہبر معظم انقلاب اسلامی کے مشیر اور سابق وزير دفاع جنرل حسین دہقان نے ایسوسی ایٹڈ پریس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم قومی دفاعی توانائي اور قدرت کے بارے میں کسی سے مذاکرات نہیں کریں گے۔

جنرل دہقان نے عرب ممالک کے ساتھ اسرائیل کے سفارتی تعلقات اور سیاسی توسیع کے بارے میں ایسوسی ایٹڈ پریس کے نامہ نگار کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ انقلاب اسلامی کی کامیابی کے بعد اسرائيل نے اعلان کیا کہ اسرائيل کے ارکان میں شدید زلزلہ آیا ہے۔ انقلاب اسلامی نے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کرکے اس کے سفارتخانہ کی جگہ فلسطینی سفارتخانہ قائم کیا، ایران کبھی بھی غاصب صہیونی حکومت کو تسلیم نہیں کرےگا۔  اسرائیل نے ہمیشہ ایران کو اپنے لئے خطرہ قراردیا ہے ۔ اسرائیل ہمیشہ اس نعرے کو دہراتا ہے کہ ایران ، اسرائيل کو نابود کرنے کی تلاش و کوشش کررہا ہےاور اس کے ثبوت میں حضرت امام خمینی (رہ) کا وہ قول بھی نقل کرتا ہے کہ " اسرائيل کو صفحہ ہستی سےنابود ہوجانا چاہیے"۔ انقلاب اسلامی نے بھی اعلان کیا ، کررہا ہے اور کرتا رہےگا کہ ہم فلسطینی عوام کے ساتھ ہیں اور فلسطینی عوام کے مفادات اور اہداف کا حتمی طور پر دفاع کریں گے۔

ہم فلسطینیوں کو ان کے قانونی، تاریخی اور ملکیتی حقوق  دلانے کی بھر پور حمایت کرتے ہیں اور کرتے رہیں گے۔ دنیا  میں اسرائيل کے حامی  سیاسی اور حقوق  اداروں نے جو بھی کرنا تھا وہ اسرائیل کے مفادات میں کیا ، اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل میں اسرائیل کے خلاف جتنی قراردادیں منظورہوئیں ان کے نفاذ کے سلسلے میں کسی بھی  ملک نے کوئی تلاش و کوشش نہیں کی، حالانکہ سکیورٹی کونسل اپنی قراردادوں پر عمل درآمد کرانے کی پابند ہے لیکن ہم دیکھتے ہیں کہ سکویرٹی کونسل میں اسرائیل کے خلاف قراردادیں منظور ہوئیں لیکن ان پر عمل درآمد نہیں ہوا۔

امریکہ اور یورپی ممالک نے ہمیشہ غاصب صہیونی حکومت کی حمایت کی ہے جبکہ اسرائيل کی غاصب حکومت خطے کے امن و استحکام کے لئۓ بہت بڑا خطرہ ہےاور ہم نے ہمیشہ دنیا کو اسرائیل کے خطرے سے آگاہ کیا ہے۔

جنرل دہقان نے کہا کہ امریکہ اور یورپی ممالک اسرائیل جیسی دہشت گرد ، غاصب اور ظالم حکومت کی حمایت کررہے ہیں ان کو کوئی کچھ نہیں کہتا ظالم حکومت کی حمایت قابل مذمت ہے ہم تو فلسطین کے مظلوم مسلمانوں کی حمایت کررہے ہیں اور آخری سانس تک ہم فلسطینیوں کے ساتھ کھڑے رہیں گے۔

جنرل دہقانی نے خطے میں امریکہ کی معاندانہ پالیسی پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ  عرب ممالک سمیت پوری دنیا پر اپنا رعب و دبدبہ جمانے کی تلاش و کوشش کرتا ہے اور کچھ ممالک امریکی دبدبے میں آجاتے ہیں اور خطے کے عرب ممالک کا بھی یہی حال ہے انھوں نے امریکی دباؤ میں اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کئے ہیں۔ جبکہ ایران نے فیصلہ کررکھا ہے کہ وہ اپنے ملکی اور قومی مفادات کے تحفظ کے سلسلے میں امریکی منہ زوری کو کسی بھی صورت میں تسلیم نہیں کرےگا۔

جنرل دہقان نے کہا کہ ایران کے خلاف امریکی پابندیاں ناکام ہوگئی ہیں ایران ترقی اور پیشرفت کی شاہراہ پر گامزن ہے اور ہم دفاعی صلاحیتوں اور مفادات کے بارے میں کسی سے مذاکرات نہیں کریں گے۔

News Code 1904009

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 2 =