تین امریکی سینیٹرز نے امارات کو ہتھیاروں کی فروخت کی مخالفت کردی

امریکی صدرٹرمپ کی متحدہ عرب امارات کو 23 ارب ڈالر سے زائد مالیت کے ہتھیاروں کی فروخت کی کوششوں میں رکاوٹ پیدا ہوگئی ہیں ۔

اطلاعات کے مطابق امریکہ اور امارات کے درمیان ایک معاہدے کے تحت متحدہ عرب امارات کو ایف 35 لڑاکا طیارے، ڈرونز، فضا سے فضا تک مار کرنے والے میزائل سمیت دیگر ہتھیار فروخت کئے جانے ہیں۔

ڈیموکریٹک سینیٹر بوب میننڈیز، کرس مرفی اور ری پبلکن سینیٹر رینڈ پاول نے کہا ہے کہ وہ امریکی صدر کی امارات کو 23 ارب ڈالر سے زائد مالیت کے ہتھیاروں کی فروخت روکنے کیلئے قانونی سازی کریں گے۔ 

امریکی سینیٹ کی خارجہ تعلقات کی کمیٹی اور ایوان نمائندگان کی خارجہ امور کی کمیٹی کو ہتھیاروں کی فروخت کا جائزہ لینے اور اسے روکنے کا اختیار حاصل ہے۔

امریکی سینیٹرز کو خدشہ ہے کہ اتنے بڑے پیمانے پر ہتھیاروں کی فروخت سے مشرق وسطیٰ میں طاقت کا توازن بگڑ سکتا ہے۔  اس معاہدے کے بارے ميں امریکی وزير خارجہ مائيک پمپئو نے گزشتہ ہفتے ہی امریکی کانگريس کے ارکان کو مطلع کيا تھا۔

News Code 1903999

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 5 =