وائٹ ہاؤس میں جاری انتشار کے باعث امریکہ کے روس اور چین سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں

امریکہ کے سابق صدر باراک اوبامہ نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں جاری انتشار کے باعث واشنگٹن کے دنیا کی بڑی طاقتوں روس اور چین سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے امریکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ کے سابق صدر باراک اوبامہ نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں جاری انتشار کے باعث واشنگٹن کے دنیا کی بڑی طاقتوں روس اور چین سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں۔ 

اوبامہ نے موجودہ صدرٹرمپ  کو مفید مشورہ و تجویز بھی دی جبکہ وائٹ ہاؤس سے متعلق اپنے خدشات کا اظہار بھی کیا۔  جو بائیڈن کی کامیاب انتخابی مہم کا حصہ رہنے والے باراک اوبامہ نے کہا ہے کہ یہ موجودہ صدر ٹرمپ کے لیے بہترین وقت ہے کہ وہ جو بائیڈن کے سامنے اپنی شکست تسلیم کر لیں۔ 

امریکہ کے سابق صدر باراک اوبامہ نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں جاری انتشاراور اختلاف کے باعث واشنگٹن کے دنیا کی بڑی طاقتوں روس اور چین سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں۔ 

باراک اوبامہ کا کہنا تھا کہ ہماری سیاست میں دراڑ موجود ہے اور ہمارے مخالفین اس سے آگاہ ہیں اور وہ اسے مزید بڑھاسکتے ہیں۔ 

انھوں نے ری پبلکنز کے ایسے حامیوں کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا جو ٹرمپ کے انتخابات میں دھاندلی کے دعوے کی حمایت کر رہے ہیں۔ 

واضح رہے کہ امریکہ میں کھوکھلی جمہوریت کی دنیا کے سامنے قلعی کھل گئی ہے امریکی صدرٹرمپ  اور اس کے حریف بائيڈن  دونوں امریکی انتخابات میں ایک دوسرے پر دھاندلی کے الزامات عائد کررہے ہیں۔

News Code 1903956

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 1 =