بنگلہ دیش میں خواجہ سراؤں کے لئے پہلا مدرسہ قائم کردیا گیا

بنگلہ دیش میں خواجہ سراؤں کو دینی تعلیم سے روشناس کرانے کے لیے پہلا مدرسہ قائم کردیا گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ بنگلہ دیش میں خواجہ سراؤں کو دینی تعلیم سے روشناس کرانے کے لیے پہلا مدرسہ قائم کردیا گیا ہے۔ 

اطلاعات کے مطابق بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ  میں پہلی بار تیسری جنس کے لیے ’اسلامک تھرڈ جینڈر اسکول‘ کے نام سے ایک مدرسہ کھولا گیا ہے جہاں لازمی اسلامی تعلیم کے علاوہ انگریزی، ٹیکنالوجی، سائنس، ریاضی، اور معاشرتی علوم کی تعلیم بھی دی جائے گی تاکہ وہ باعزت روزگار بھی حاصل کرسکیں تاہم ابتدائی طور پر 150 بالغ خواجہ سراؤں کو داخلہ دیا جائے گا۔

بنگلہ دیش میں خواجہ سراؤں کے لیے کام کرنے والی این جی اوز کے اعداد و شمار کے مطابق ملک بھر میں خواجہ سراؤں کی آبادی 15 لاکھ کے لگ بھگ ہے تاہم  حکومت کا اصرار ہے کہ ایسے شہریوں کی تعداد صرف 50 ہزار ہے جن کی تعلیم و تربیت اور ہنر سکھانے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں تاکہ معاشرے کا یہ طبقہ بھی سماج کے لیے کارآمد ثابت ہو۔

News Code 1903812

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 8 + 8 =