آسٹریا میں فائرنگ کے نتیجے میں کم سے کم 7 افراد ہلاک

آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں یہودی عبادت گاہ کے قریب فائرنگ سے کم سے کم 7 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

مہر خبررساں روسیا الیوم کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں یہودی عبادت گاہ کے قریب فائرنگ سے کم سے کم 7 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ پولیس نے ایک حملہ آور کو ہلاک اور ایک کو گرفتار کرلیا۔

ویانا کے سٹی پولیس ڈپارٹمنٹ کے مطابق وسطی ویانا میں پولیس اوردہشت گردوں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں پولیس آفیسر سمیت کئی افراد زخمی ہوگئے جب کہ کارروائی میں ایک حملہ آور مارا گیا اور ایک گرفتار کرلیا گیا۔ حملہ آورں نےایک ریستوران میں کئی افراد کو یرغمال بھی بنایا۔

فائرنگ کے بعد پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور سرچ آپریشن شروع کردیا۔ سڑکوں پر پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی جنہوں نے ٹریفک کی روانی بند کردی۔ انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق واقعہ ویانا کے وسط میں پیش آیا جہاں یہودی عبادت گاہ بھی موجود ہے۔ کم از کم دو حملہ آور پولیس کے ہاتھوں مارے گئے اور ایک حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑالیا۔ ایک میڈیا ہاؤس نے دعویٰ کیا ہے کہ حملہ آور کم از کم دس تھے بقیہ کی تلاش جاری ہے۔ وزیر داخلہ نے اس واقعے کو متعدد افراد کا دہشت گردانہ حملہ قرار دیا ہے اور شہریوں سے اپیل کی ہے کہ وہ عوامی مقامات سے دور رہیں اور گھروں میں رہنے کو ترجیح دیں۔

مقامی میڈیا کے مطابق فائرنگ کے سبب زخمی ہونے والا ایک پولیس آفیسر دم توڑ گیا جب کہ کئی زخمیوں کی حالت نازک ہے۔ یہودی کمیونٹی تنظیم کے صدر نے کہا ہے کہ فائرنگ کا نشانہ عبادت گاہ نہیں تھی۔

News Code 1903744

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =