عالمی ادارہ صحت کے سربراہ قرنطینہ میں چلے گئے

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ٹیڈروس ادھانو نے کورونا وائرس سے متاثرہ شخص سے ملاقات کے بعد خود کو قرنطینہ کرلیا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ ٹیڈروس ادھانو نے کورونا وائرس سے متاثرہ شخص سے ملاقات کے بعد خود کو قرنطینہ کرلیا۔ ٹیڈروس ادھانو نے اپنے سوشل میڈیا پیغام میں بتایا کہ اُن سے ملنے والے ایک شخص کے کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آنے کی وجہ سے وہ خود کو قرنطینہ کر رہے ہیں۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اُن میں کورونا کی علامات ظاہر نہیں ہوئی ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کے سربراہ نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او کی گائیڈ لائنز کے مطابق قرنطینہ میں رہوں گا اور گھر سے کام کروں گا۔ آج 2 نومبر کو جاری اپنے سلسلہ وار ٹوئٹس میں انہوں نے کہا کہ ’میرا رابطہ ایک ایسے شخص سے ہوا تھا جس کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا تھا، میں ٹھیک ہوں اور مجھ میں کوئی علامات نہیں ہیں مگر میں عالمی ادارہ صحت کے پروٹوکولز کے تحت آنے والے دنوں کے لیے خود کو قرنطینہ کر رہا ہوں، اور گھر سے کام کروں گا۔

ٹیڈروس نے اپنے بیان میں اس بات ہر زور دیا کہ یہ بات انتہائی اہم ہے کہ ہم سب صحت کی گائڈ لائنز پر عمل کریں۔ ہم نے اگر وائرس کو ختم کرنا ہے، اس کے پھیلنے کی لڑی کو توڑنا ہے تو پھر یہی اس کا واحد طریقہ ہے۔

News Code 1903737

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 13 =