پاکستان میں سیکیورٹی فورسز کے قافلے پر حملے میں 15 اہلکار ہلاک

پاکستان کے علاقے شمالی وزیرستان اور بلوچستان میں سیکیورٹی فورسز کے قافلے کو نشانہ بنا یا جس کے نتیجے میں 15اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی نے پاکستانی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستان کے علاقے شمالی وزیرستان اور بلوچستان میں سیکیورٹی فورسز کے قافلے کو نشانہ بنا یا جس کے نتیجے میں 15اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

سکیورٹی حکام کا کہنا ہے کہ گوادر کے علاقے کوسٹل ہائی وئے بزی ٹاپ پر دہشتگردوں نے بھاری ہتھیاروں سے او جی ڈی سی ایل کے قافلے کو نشانہ بنایا، جس میں 15 سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے۔ ہلاک ہونے والوں میں فرنٹیئر کور کے 8 اہلکار اور او جی ڈی سی ایل کے 7سیکیورٹی اہلکار شامل ہیں۔

حکام کے مطابق دہشت گردوں نے کراچی سے قریباً 300 کلومیٹر دور بلوچستان کے ضلع گوادر کے علاقے اورماڑہ میں مکران کوسٹل ہائی وے پر بزی ٹاپ کے مقام پر حملہ کیا ہے۔ اس میں پاکستان کی سرکاری آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی (او جی ڈی سی ایل) کے قافلے میں شامل گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ کمپنی کے ملازمین کو دو گاڑیوں میں اورماڑہ سے کراچی لے جایا جا رہا تھا اور ان کی حفاظت کے لیے ایف سی 128 ونگ کی دو گاڑیاں ان کے ہمراہ تھیں۔ بزی ٹاپ کے مقام پر پہاڑی علاقے میں گھات لگائے نامعلوم حملہ آوروں نے ان پر خودکار ہتھیاروں سے اندھا دھند فائرنگ کردی اور راکٹ بھی داغے ہیں۔ لاشوں اور زخمیوں کو اورماڑہ میں قائم بحریہ کے درمان جاہ ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ دوسری طرف پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے فوری طور پر مکران کوسٹل ہائی وے واقعہ کی رپورٹ طلب کی اور اہلکاروں کے خاندان سے اظہار تعزیت کیا۔

واضح رہے کہ شمالی وزیرستان کے علاقے رزمک میں بھی دہشت گردوں نے پاکستانی فوج کے سیکیورٹی قافلے کو نشانہ بنا یا جس کے نتیجے میں ایک افسر سمیت 6 اہلکار ہلاک ہوگئے۔

News Code 1903452

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 2 =