ٹرمپ اور بائیڈن کے درمیان کوئي فرق نہیں / ہمیں عوام کی معاشی صورتحال پر توجہ دینی چاہیے

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے کہا ہے کہ ایران کے خلاف امریکہ کی معاندانہ خارجہ پالیسی برقرار رہےگی ، ٹرمپ یا بائیڈن کے صدر بننے سے اس میں کوئي فرق نہیں پڑےگا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے نامہ نگار کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے کہا ہے کہ ایران کے خلاف امریکہ کی معاندانہ خارجہ پالیسی برقرار رہےگی ، ٹرمپ یا بائیڈن کے صدر بننے سے اس میں کوئي فرق نہیں پڑےگا۔

ایرانی اسپیکر نے ہفتہ دفاع مقدس  کی مناسبت سے ایرانی قوم اور سپاہ اسلام کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ دفاع مقدس نے ہمیں استقلال ، آزادی اور اپنے پاؤں پرکھڑے ہونے کا درس دیا ہے، ہمیں ملک کی اقتصادی پیشرفت میں اندرونی توانائیوں پر خصوصی توجہ دینی چاہیے اور اپنے اقتصادی مسائل کو مغرب سے جوڑنے کی کوشش نہیں کرنی چاہیے۔

محمد باقر قالیباف نے کہا کہ دفاع مقدس ہمارے لئے عوام کو باور کرنے کا مدرسہ ہے۔ ہم نے دفاع مقدس کے دوران ایرانی عوام کی طاقت اور قدرت کا قریب سے مشاہدہ کیا ،سن 1361 شمسی میں آبادان کے محاصرے کو توڑنا، طریق القدس اور فتح المبین کارروائیوں میں ایرانی قوم نے دشمن کی پیشقدمی کو روک کر اس پر اپنا خوف طاری کردیا تھا۔

قالیباف نے کہا کہ عوام ہمارا سرمایہ ہیں عوام کو مشکل شرائط میں فراموش نہیں کرنا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں امریکی پابندیوں کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا چاہیے اور اگر ہم نے امریکی پابندیوں کے خلاف عقب نشینی کی تو امریکہ مزید آگے بڑھ جائےگا۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں عوام کو مضبوط بنانا چاہیے اور عوام کی مشکلات کو حل کرنے کے سلسلے میں متعلقہ اداروں کو فعال کردار ادا کرنا چاہیے۔

News Code 1903038

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 2 + 15 =