فلسطینی صدر کا صدی معاملے سے متعلق کسی سےمذاکرات نہ کرنے کا فیصلہ

فلسطین کے صدر محمود عباس نے صدی معاملے کو خیانت اور غداری پر مبنی قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ فلسطینی حکام صدی معاملے کے بارے میں کسی بھی ثالث سے مذاکرات نہیں کریں گے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے المیادین کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فلسطین کے صدر محمود عباس نے صدی معاملے کو خیانت اور غداری پر مبنی قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ فلسطینی حکام صدی معاملے کے بارے میں کسی بھی ثالث سے مذاکرات نہیں کریں گے۔

فلسطینی صدر نے رام اللہ میں فلسطینی گروہوں کے نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ امارات نے اسرائیل کے ساتھ  سفارتی تعلقات قائم کرکے فلسطینی عوام کی پشت میں خنجر گھونپ دیا ہے اور فلسطینی امارات کی اس تاریخی حیانت کو کبھی فراموش نہیں کریں گے۔ محمود عباس نے کہا کہ فلسطینی عوام کو اہداف سے منحرف کرنے کے سلسلے میں بعض امریکی اتحادی  عرب ممالک کی سازشیں جاری ہیں۔ اس نے کہا کہ ہم صدی معاملے اور فلسطینی اراضی کے اسرائیل کے ساتھ  الحاق کے سلسلے میں کسی کی ثالثی قبول نہیں کریں گے۔

News Code 1902710

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 2 =