صدر ٹرمپ کا امریکی شہریوں کو دو مرتبہ ووٹ ڈالنے کا مشورہ

امریکی صدر ٹرمپ نے امریکہ کے آئندہ صدارتی انتخابات میں شہریوں کو دو مرتبہ ووٹ ڈالنے کا مشورہ دے دیا جب کہ امریکی قوانین کے مطابق ایسا کرنا غیر قانونی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی صدر ٹرمپ نے امریکہ کے آئندہ صدارتی انتخابات میں شہریوں کو دو مرتبہ ووٹ ڈالنے کا مشورہ دے دیا جب کہ امریکی قوانین کے مطابق ایسا کرنا غیر قانونی ہے۔

اطلاعات کے مطابق امریکی صدر نے شمالی کیرولینا میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئےکہا کہ ووٹرز کو چاہیے کہ وہ اپنے رائے دہی کے حق کو یقینی بنانے کے لیے ڈاک کے ذریعے ووٹ دینے کے بعد ذاتی طور پر بھی جا کر ووٹ ڈالیں ۔ اگر کسی نے ڈاک کے ذریعہ بھیجے گئے ووٹ کو غائب کر بھی دیا تو ذاتی طور پر دیا گیا ووٹ شمار ہوجائے گا۔

واضح رہے کہ امریکہ کی متعدد ریاستوں میں کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے ڈاک کے ذریعہ ووٹنگ یا بیلٹ ووٹ پر عمل درآمد کا فیصلہ کیا گیا ہے جب کہ امریکی صدر اول دن سے اس طریقہ کار کو غیر محفوظ قرار دے رہے ہیں۔

امریکی کے مطابق مختلف ریاستوں میں جوں جوں ڈاک کے ذریعہ سے ووٹ دینے  والوں کی رجسٹریشن میں اضافہ ہورہا ہے اور صدر کی جانب سے ووٹ کے اس طریقہ کار کے متعلق غلط دعوے زور پکڑنے لگے ہیں۔

امریکہ میں ایک ہی انتخاب میں دو مرتبہ ووٹ دینا قانونی طور پر جرم ہے۔ امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے اس حالیہ بیان پر امریکہ میں نئی بحث چھڑ گئی ہے۔ واضح رہے کہ  امریکہ میں اس سال 3 نومبر کو صدر کا انتخاب ہوگا۔

News Code 1902704

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 8 =