اسرائیل کی پہلی پرواز اسرائیلی وفد کو لیکر متحدہ عرب امارات پہنچ گئی

اسرائیل کی پہلا مسافر بردار طیارہ امریکی اور اسرائیلی وفد کو لے کر متحدہ عرب امارات پہنچ گيا ہے اسرائیلی طیارہ سعودی عرب کی فضائی حدود سے گزر کر 3 گھنٹے 20 منٹ میں ابوظہبی پہنچا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے العربیہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اسرائیل کی پہلا مسافر بردار طیارہ امریکی اور اسرائیلی وفد کو لے کر متحدہ عرب امارات پہنچ گيا ہے اسرائیلی طیارہ سعودی عرب کی فضائی حدود سے گزر کر 3 گھنٹے 20 منٹ میں ابوظہبی پہنچا ہے۔ امریکی وفد کی سربراہی صدر ٹرمپ کے داماد جیرڈ کوشنر کررہے ہیں، اسرائیل کے نیشنل سکیورٹی مشیر بھی وفد کا حصہ ہیں۔ اسرائیلی، امریکی اور اماراتی حکام کے درمیان مذاکرات میں ایوی ایشن ،سیاحت ،تجارت ،صحت ، توانائی اور سیکیورٹی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے پر بات کی جائے گی۔

طیارےمیں مسافروں کو اسرائیلی اور اماراتی پرچم والے ماسک بھی فراہم کئے گئے ہیں، اسرائیلی کمرشل پرواز کل صبح ابوظہبی سے واپسی کیلئے روانہ ہوجائے گی۔

واضح رہے کہ 13 اگست کو اسرائیل اور امارات کے درمیان سازشی معاہدہ ہوا ، جس کی ترکی، ایران، تیونس، مراکش اور بعض دیگر اسلامی ممالک نے مذمت کرتے ہوئے اسے فلسطینیوں کے ساتھ بہت بڑی خیانت اور غداری قراردیا ہے۔ فلسطین نے امارات سے اپنا سفیر واپس بلا کر امارات سے سفارتی تعلقات ختم کردیئے ہیں۔ ادھر سعودی عرب اور بحرین بھی اسرائل کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے کی صف میں کھڑے ہیں۔ سعودی عرب نے امارات اور اسرائیل کے درمیان معاہدے میں بھی کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ صدر ٹرمپ کے داماد جیرڈ کوشنر سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان کے قریبی دوست ہیں جس نے سعودی عرب کو بھی اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنے پر آمادہ کرلیا ہے لیکن اس کا اعلان کسی مناسب وقت میں کیا جائےگا۔

News Code 1902644

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 8 =