متحدہ عرب امارات نے اسرائیل کے ساتھ تجارتی بائیکاٹ کی قانونی شق کو منسوخ کردیا

متحدہ عرب امارات نے یہودی ریاست کے ساتھ امن معاہدے کے بعد اسرائیل کے ساتھ تجارتی بائیکاٹ سے متعلق ملکی آئین کی قانونی شق کو منسوخ کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے الجزیرہ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ متحدہ عرب امارات نے یہودی ریاست کے ساتھ امن معاہدے کے بعد اسرائیل کے ساتھ تجارتی بائیکاٹ سے متعلق ملکی آئین کی قانونی شق کو منسوخ کردیا ہے۔

اطلاعات  کے مطابق متحدہ عرب امارات کے بادشاہ شیخ خلیفہ بن زاید النہیان کی جانب سے جاری فرمان میں اسرائیل کے تجارتی بائیکاٹ اور خلاف ورزی پر سزاؤں سے متعلق 1972 کے وفاقی قانون نمبر 15 کو ختم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق بادشاہ کے فرمان کے بعد سے اب متحدہ عرب امارات کی کمپنیاں اور تاجر اسرائیل کی کمپنیوں اور کاروباری طبقے سے معاہدے کرنے میں آزاد ہوں گے۔

ادھر اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے درمیان چند روز قبل طے پانے والے امن معاہدے کے نتیجے میں اسرائیلی نژاد امریکی وفد تل ابیب سے 31 اگست کو پہلی کمرشل ایئرلائن سے ابوظہبی پہنچے گا۔

واضح رہے کہ چند روز قبل متحدہ عرب امارات نے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے کا اعلان کرتے ہوئے امن معاہدے پر دستخط کیے تھے جس کی دنیائے اسلام میں مذمت کا سلسلہ جاری ہے۔ فلسطین نے امارات کے ساتھ سفارتی تعلقات خۃم کرتے ہوئے کہا ہے کہ امارات نے فلسطینیوں کی پشت میں خنجر گھونپ دیا ہے۔

News Code 1902601

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 5 =