ایران خطے میں اسلامی مزاحمتی تحریکوں کا حامی ملک ہے

لبنان میں فلسطینی تنظیم جہاد اسلامی کے نمائندے نے امارات کی طرف سے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات برقرار کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران خطے میں اسلامی مزاحمتی تحریکوں کا حامی ملک ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق لبنان میں فلسطینی تنظیم جہاد اسلامی کے نمائندے احسان عطایا  نے متحدہ عرب امارات کی طرف سے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات برقرار کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران خطے میں اسلامی مزاحمتی تحریکوں کا حامی ملک ہے۔

جہاد اسلامی کے نمائندے نے اسرائیل کے ساتھ امارات کے سفارتی تعلقات کو امارات کی سیاسی اور تاریخی شکست  قراردیتے ہوئے کہا کہ امارات اور بعض دیگر عرب ممالک کے اس سے قبل اسرائیل کے ساتھ خفیہ تعلقات تھے اور یہی وجہ ہے کہ خطے میں امریکی اتحادی عرب ممالک مسئلہ فلسطین کے حل میں سب سے بڑي رکاوٹ تھے اس سے قبل عرب ممالک فلسطینیوں کی پشت میں خنجر گھونپ رہے تھے لیکن آج وہ اسرائیل کے ساتھ ملکر فلسطینی عوام کے ساتھ مقابلہ کرنے پر تیار ہوگئے ہیں اور ہم ہر صورت میں اسرائیل اور اس کے اتحادیوں کا مقابلہ کریں گے۔  انھوں نے کہا کہ امریکہ اور سعودی عرب  کی شام اور یمن کی پالیسی ناکام ہوگئی ہے اور اب وہ ایران پر دباؤ قائم کرنے کے لئے اماراتی کارڈ استعمال کررہے ہیں۔ ایران خطے کی مزاحتمی تحریکوں کا اصلی حامی اور روح رواں ہے اور مسئلہ فلسطین کے منصفانہ اور جمہوری حل کا خواہاں ہے۔

News Code 1902370

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 8 =