امارات کی اسلام اور مسلمانوں کے ساتھ غداری کی مذمت / فلسطین حق و باطل کی پہچان کا معیار

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے اسلام، مسلمانوں اور فلسطینیوں کے خلاف متحدہ عرب امارات کی غداری اور خیانت کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام کے لباس میں چھپے ہوئے منافقوں کا چہرے نمایاں ہورہے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے اسلام، مسلمانوں اور فلسطینیوں کے خلاف متحدہ عرب امارات کی غداری اور خیانت کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام کے لباس میں چھپے ہوئے منافقوں کا چہرے نمایاں ہو رہے ہیں۔

صدر روحانی نے کہا کہ ہمارے ہمسایہ ملک امارات نے فلسطینی بچوں ، عورتوں اور جوانوں کے قاتل اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کرکے فلسطینیوں کے ساتھ غداری کی ہے اور امارات عملی طور پر فلسطینیوں کے قاتلوں کے ساتھ ہوگیا ہے۔ صدر روحانی نے کہا کہ خلیج فارس کی عرب ریاستیں پہلے بھی فلسطینیوں کے قتل میں شریک تھیں لیکن اب ان کی مخفیانہ اور پوشیدہ شراکت اب ان نمایاں اور طشت از بام ہوگئی ہے۔

صدر روحانی نے کہا کہ امارات نے غلط اور باطل راستے کا انتخاب کیا ہے ۔ امارات نے اسلام، مسلمانوں اور فلسطینیوں کے ساتھ غداری اور خیانت کا ارتکاب کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ امارات کے عوام بھی اماراتی حکام کے اس اقدام کے سراسر خلاف ہیں۔

صدر روحانی نے کہا کہ اسرائیلی حکام کسی بھی قانون اور اخلاق کے پابند نہیں ہیں ۔ اسرائیل مزید فلسطینی علاقوں پر قبضہ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے اور ایسی صورتحال میں امارات کا اقدام فلسطینیوں کی پشت میں خنجر گھونپنے کے مترادف ہے۔ صدر روحانی نے کہا کہ یزید ، معاویہ اور ہندہ جگر خوارہ کے حامی اور طرفدار آج امریکہ کی غلامی پر افتخار کررہے ہیں اور اسرائیل جیسی غاصب، ظالم اور جابر حکومت کا ساتھ دے رہے ہیں۔ سعودی عرب، امارات اور بحرین در حقیقت معاویہ ، یزید اور ہندہ جگر خوارہ  کے طرفدار ہیں یزید اور معاویہ کے طرفدار آج امریکہ اور اسرائیل کے طرفدار ہیں اور حضرت امام حسین علیہ السلام کے حامی اور طرفدار آج فلسطینیوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔

صدر روحانی نے کہا کہ امارات کے اس اقدام سے منافقوں کے چہرے مزید نمایاں ہوجائیں گے انھوں نے کہا کہ فلسطین اور بیت المقدس آج حق اور باطل کی پہچان کا بہترین معیار ہیں۔

News Code 1902302

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 9 + 4 =