سکیورٹی کونسل کو امریکہ کی معاندانہ کوششوں کو ناکام بنانا چاہیے

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف نے اپنے ایک مقالہ میں لکھا ہے کہ سکیورٹی کونسل امریکہ کو اکیسویں صدی کی سفارتی کامیابی کو نابود کرنے کی اجازت نہیں دےگی۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف نے  اپنے ایک مقالہ میں لکھا ہے کہ سکیورٹی کونسل امریکہ کو اکیسویں صدی کی سفارتی کامیابی کو نابود کرنے کی اجازت نہیں دےگی۔

ایرانی وزير خارجہ نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ سکیورٹی کونسل کے اراکین امریکہ کی مایوس حکومت کی مشترکہ ایٹمی معاہدے کو نابود کرنے کی معاندانہ کوششوں کو ناکام بنادیں گے۔

محمد جواد ظریف نے کہا کہ امریکہ کی موجودہ حکومت اپنی اندرونی ناکامیوں اور کورونا وائرس کا مقابلہ کرنے کے سلسلے میں اپنی ناکامی کو چھپانے کے لئے عالمی امن و سلامتی کو خطرہ میں ڈالنے کی تلاش و کوشش کررہی ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ امریکی حکومت کی طرف سے سکیورٹی کونسل کی قرارداد 2231 کی صریح خلاف ورزی  امریکی حکومت کی یکطرفہ پالیسی اور منہ زوری کا مظہر ہے۔ اور سکیورٹی کونسل کو امریکہ کی منہ زوری اور عالمی سطح پر یکطرفہ پالیسیوں کو ڈٹ کر مقابلہ کرنا چاہیے۔

جواد ظریف نے کہا کہ امریکہ کی ظالم حکومت نے عالمی ادارہ صحت ڈبلیو ایچ او سے بحرانی شرائط میں خارج ہوکر ثابت کردیا کہ وہ کسی بھی عالمی معاہدے کی پابند نہیں ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے اپنے مقالہ میں لکھا ہے کہ عالمی برادری کو امریکہ کی منہ زوری کا مقابلہ کرنا چاہیے اور امریکہ کو عالمی امن کو خطرے میں ڈالنے اور دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے اور عالمی معاہدوں کا پاس و لحاظ کرنے کا پابند بنانا چاہیے۔

News Code 1902218

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 2 =