ایران کا سعودی عرب کے خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں شفاف تحقیقات کا مطالبہ

بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی میں اسلامی جمہوریہ ایران کے نمائندے غریب آبادی نے بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی سے سعودی عرب کے خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی میں اسلامی جمہوریہ ایران کے نمائندے  کاظم غریب آبادی نے بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی سے سعودی عرب کے خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

ایرانی نمائندے نے سعودی عرب کی طرف سے زرد کیک کی فیکٹری کی تعمیر کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ  بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کو سعودی عرب کے خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں ایٹمی ایجنسی کے اراکین کو آگاہ کرنا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ سعودی عرب نے این پی ٹی پر دستخط کررکھے ہیں اور اس کے باوجود سعودی عرب اپنےخفیہ ایٹمی پروگرام کے معائنے کی اجازت دینے سے انکار کررہا ہے۔

انھوں نے کہا کہ سعودی عرب کے پاس کوئی تحقیقاتی ریئکٹر موجود نہیں ہے لہذا اس کے خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں شفافیت ضروری ہے اور بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کو شفافیت کے بارے میں  اپنی ذمہ داری کو پورا کرنا چاہیے۔ غریب آبادی نے کہا کہ سعودی عرب کے غیر شفاف اور خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں تشویش لاحق ہے۔ سعودی عرب کو اپنے خفیہ ایٹمی پروگرام کے بارے میں بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے معائنہ کاروں کو اجازت دینی چاہیے۔

News Code 1902152

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 11 =