مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورت حال نہ ختم ہونے والی المناک داستاں

بھارت کے سابق وزیر خزانہ اور کانگریس کے اہم رہنما چدمبرم نے ٹوئیٹر پر اپنے بیان میں مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورت حال کو نہ ختم ہونے والی المناک داستان قرار دیتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں کے آزادی اظہار رائے پر قدغن لگائی گئی ہے اور پوری وادی کو قید خانے میں تبدیل کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق بھارت کے سابق  وزیر خزانہ اور کانگریس کے اہم رہنما چدمبرم نے ٹوئیٹر پر اپنے بیان میں مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورت حال کو نہ ختم ہونے والی المناک  داستان قرار دیتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں کے آزادی اظہار رائے پر قدغن لگائی گئی ہے اور پوری وادی کو قید خانے میں تبدیل کردیا ہے۔  اطلاعات کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ٹویٹ میں سابق بھارتی وزیر خزانہ چدم برم نے انڈین ایکسپریس میں شائع ہونے والے اپنے کالم کا لنک شیئر کیا ہے، انہوں نے اپنے کالم کا عنوان " نہ ختم ہونے والی داستان الم " رکھا اور گزشتہ برس 5 اگست کو کشمیریوں کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد سے اب تک بھارتی فوج کے ہاتھوں جاں بحق ، زخمی اور غیر قانونی طور پر گرفتار ہونے والوں سے متعلق اعداد و شمار بھی قلم بند کیے۔

اپنے کالم میں سابق وزیر خزانہ نے لکھا کہ تاریخ میں کبھی بھی بھارت کو مقبوضہ کشمیر جیسے لاک ڈاون کا سامنا نہیں کرنا پڑا جہاں عوام کو حق آزادی اظہار رائے سے محروم کردیا گیا ہے اور عوام کو بھی اخبارات، ٹیلی ویژن، موبائل، ٹیلیفون، انٹرنیٹ، اسپتالوں، تھانوں، عدالتوں اور منتخب نمائندوں تک رسائی نہیں دی جا رہی ہے۔

کانگریس رہنما چدم برم نے مزید لکھا کہ مقبوضہ کشمیر کو ایک جیل میں تبدیل کیا گیا ہے اور مقبوضہ کشمیر میں جو پالیسی اختیار کی گئی ہے جس کا نہ تو کوئی فائدہ ہوا اور نہ ہی مستقبل میں کوئی فائدہ ہوگا بلکہ موجودہ حکومت کی اس پالیسی سے ملک کو شدید نقصان پہنچے گا اور ملکی وحدت متاثر ہوگی۔

واضح رہے کہ کانگریس جماعت سے تعلق رکھنے والے سابق وزیر خزانہ چدم برم نے مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے مودی حکومت کے سیاہ قوانین اور غیر آئینی اقدامات پر کڑی تنقید کی تھی جس پر مودی حکومت نے چدم برم پر جھوٹے مقدمات دائر کرکے انہیں گرفتار کرلیا تھا۔

News Code 1902011

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 1 =