چین کا ہانگ کانگ کے مسئلہ پر امریکہ کو منہ توڑ جواب دینے کا عزم

چین نے ہانگ کانگ کے حوالے سے امریکی کانگریس سے ایکٹ کی منظوری کو مسترد کرتے ہوئے واضح کردیا ہے کہ اگر امریکہ نے اپنے غلط فیصلے پر اصرار کیا تو چین منہ توڑ اورمؤثر جواب دے گا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے شینہوا کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چین نے ہانگ کانگ کے حوالے سے امریکی کانگریس سے ایکٹ کی منظوری کو مسترد کرتے ہوئے واضح کردیا ہے کہ اگر امریکہ نے اپنے غلط فیصلے پر اصرار کیا تو چین منہ توڑ اورمؤثر جواب دے گا۔ چینی وزارت خارجہ کی جانب جاری بیان کے مطابق ترجمان ہووا چنیونگ نے نیوز بریفنگ کے دوران کہا کہ امریکہ نے چین کی موجودگی کو نظر انداز کرتے ہوئے نام نہاد ہانگ کانگ خود مختاری ایکٹ کانگریس سے منظور کیا۔

ترجمان دفترخارجہ نے کہا کہ یہ قانون ہانگ کانگ کی قومی سلامتی کی قانونی حیثیت کو کم کرتا ہے اور چین پر پابندیاں عائد کرنے کے لیے دھمکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بین الاقوامی قانون اور بین الاقوامی تعلقات کے بنیادی اقدار کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

امریکی قانون پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس قانون کے ذریعے ہانگ کانگ اور چین کے اندرونی  معاملات میں مداخلت کو جواز فراہم کرنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘چین کی حکومت اس اقدام کی سختی سے مخالفت کرتی ہے اور امریکہ کے اس فیصلے کی شدید مذمت کرتی ہے’۔

چینی آئین کا حوالہ دیتے ہوئے ترجمان کا کہنا تھا کہ آئین متقفہ طور پرہانگ کانگ کے شہریوں سمیت تمام چینیوں کے لیے ہے جنہوں نے اس کی توثیق کردی ہے اورہانگ کانگ چین کا خصوصی انتظامی خطہ ہے۔

امریکی اقدامات کو مسترد کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ‘ہانگ کانگ کے معاملات چینی کا اندرونی معاملہ ہے، کسی بھی دوسرے ملک کو مداخلت کا کوئی حق نہیں ہے’۔

انہوں نے کہا کہ ‘چین، ہانگ کانگ کی خود مختاری، سلامتی، تحفظ اورخوشحالی کو بہترین طریقے سے برقرار رکھتا ہے اورہانگ کانگ کے معاملات میں بیرونی مداخلت کی سختی سے مخالفت کرتا ہے’۔

چین نے واضح کیا کہ اگر امریکہ اپنی غلط سمت پر جانے کے لیے اصرار کرتا رہا تو چین مؤثر جواب دے گا۔

News Code 1901617

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 7 + 9 =