یورپی ممالک کا اسرائیل کی جانب سے فلسطینی علاقوں پر مجوزہ قبضہ کو روکنے کا مطالبہ

یورپ کے 25 ممالک کے 1080 ممبران پارلیمنٹ نے اسرائیل کی جانب سے فلسطینی علاقوں پر مجوزہ قبضے کو مسترد کرتے ہو ئے اسے روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ یورپ کے 25  ممالک کے 1080 ممبران پارلیمنٹ نے اسرائیل کی جانب سے فلسطینی علاقوں پر مجوزہ قبضے کو مسترد کرتے ہو ئے اسے روکنے کا مطالبہ  کیا ہے۔ یورپین قیادت سمیت یورپین یونین کی دیگر حکومتوں کے نام لکھے جانے والے خط میں ممبران پارلیمنٹ نے کہا کہ ہم یورپ بھر میں پھیلے ہوئے پارلیمانی ممبران  ’قواعد کے تحت‘ چلتے ہوئے گلوبل آرڈر کے لیے پرعزم ہیں۔

ہمیں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان امن کے حصول کی اس تجویز پر شدید تشویش ہے جس کے تحت اسرائیل کو یہ حق دیا جا رہا ہے کہ وہ مغربی کنارے کے علاقوں کو اسرائیل میں ضم کرلے۔

اپنے خط میں ممبران پارلیمنٹ نے یورپین قیادت سے مطالبہ کیا کہ وہ اس حوالے سے پہل کرتے ہوئے اس قبضے کو رکوانے کیلئے اپنا کردار ادا کرے کیونکہ اس سے ناصرف فلسطین کی خود مختاری بے معنی ہوجائے گی بلکہ دو ریاستی حل کے ذریعے خطے میں پائیدار امن کے تصور کو بھی نقصان پہنچے گا۔

واضح  رہے کہ اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو نے اعلان کر رکھا ہے کہ وہ مقبوضہ فلسطینی علاقوں کے اسرائیل میں انضمام کیلئے یکم جولائی کو اپنی پارلیمنٹ میں قرارداد پیش کریں گے ۔

اس حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی اسرائیل کی حمایت کرتے ہوئے تجویز دی ہے کہ اسے ویسٹ بینک کے 30 فیصد حصے کو اپنے اندر شامل کر لینا چاہیے ۔ ادھر اقوام متحدہ اور عرب لیگ نے بھی   مغربی کنارے کے فلسطینی علاقوں کو اسرائیل میں ضم کرنے کے عمل کو روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔

News Code 1901154

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 5 + 4 =