چین  کا  وادی گلوان سے بھارت کے مکمل انخلا کا مطالبہ

چین نے وادی گلوان میں جھڑپوں کا الزام ایک مرتبہ پھر بھارت پر عائد کرتے ہوئے وادی سے بھارتی افواج اور آلات و سہولیات کے مکمل انخلا کا مطالبہ کردیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے دی ہندو کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چین  نے وادی گلوان میں جھڑپوں کا الزام ایک مرتبہ پھر بھارت پر عائد کرتے ہوئے وادی سے بھارتی افواج اور آلات و سہولیات کے مکمل انخلا کا مطالبہ کردیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق چین کی پیپلز لبریشن آرمی اور وزارت خارجہ کی جانب سے یہ پیغام 6 جون اور 22 جون کو کور کمانڈرز کے درمیان ہونے والی گفتگو میں پہنچا دیا ہے۔

چین کی جانب سے یہ بیان ایک ایسے موقع پر سامنے آیا ہے جب دونوں ہی فریقین بدھ کو ویڈیو کانفرنس کے ذریعے مذاکرات کے بعد موجودہ صورتحال کو پرامن طریقے سے حل کرنے پر راضی ہو گئے ہیں۔

مذاکرات کے دوران سرحدی معاملات پر رابطے اور گفتگو کے طریقہ کار پر بات کی گئی اور اتفاق رائے سے معاملات طے کیے گئے۔

بھارتی وزارت خارجہ نے کہا کہ دونوں فریقین نے چین اور بھارت کے درمیان سرحد خصوصاً مشرقی لداخ کے علاقوں میں پیشرفت پر تفصیلی گفتگو کی، بھارت نے 15 جون  کو ہونے والی جھڑپ اور اس میں 20 فوجیوں کی ہلاکت پر اپنے تحفظات کا اظہار کردیا ہے اور اس بات پر زور دیا کہ دونوں فریقین کو لائن آف ایکچوئل کنٹرول کا مکمل احترام کرنا چاہیے۔

News Code 1901152

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 1 =