بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے بورڈ کو ایران کے مفادات کو خطرے میں ڈالنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ نے کہا ہے کہ بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے حکام کو مشترکہ ایٹمی معاہدے کے دشمنوں کو ایران کے مفادات کو خطرے میں ڈالنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد نے اپنے ایک ٹوئيٹ میں متنبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے حکام کو مشترکہ ایٹمی معاہدے کے دشمنوں کو ایران کے مفادات کو خطرے میں ڈالنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔ ایرانی وزیر خارجہ نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے بعد ایران کے جوہری ادارے کے متعدد بار معائنہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بین الاقوامی جوہری ادارے کے بورڈ کے حکام کو مشترکہ ایٹمی معاہدے کے دشمنوں کو ایران کے اعلی مفادات کو خطرے میں ڈالنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔

محمد جواد ظریف نے کہا کہ گذشتہ پانچ سال میں ایران کے جوہری ادارے کے معائنہ کی تعداد بین الاقوامی جوہرے ادارے کی تاریخ میں سب سے زیادہ ہے ۔ مشترکہ ایٹمی معاہدے کی روشنی میں تمام راہ حل موجود ہیں لیکن بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کی طرف سے قرارداد جاری کرنے سے مشترکہ ایٹمی معاہدہ نابود ہوجائےگا۔ انھوں نے کہا کہ مشترکہ ایٹمی معاہدے میں موجود تین یورپی ممالک نے بھی اپنے وعدوں پر عمل نہیں کیا جبکہ ایران نے کسی بھی چیز کو مخفی نہیں رکھا اور بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی  کے ساتھ قریبی تعاون جاری ہے۔

News Code 1901003

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 6 =