ایرانی ڈاکٹر مجید طاہری امریکہ سے آزاد ہونے کے بعد وطن واپس پہنچ گئے

امریکہ نے ایرانی ڈاکٹر مجید طاہری کو غیر قانونی پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے کے بے بنیاد الزام میں گرفتار کررکھا تھا جسے امریکہ نے ایران میں قید اپنے شہری مائیکل وائٹ کے بدلے میں رہا کردیا ہے اور ڈاکٹر مجید طاہری رہائی کے بعد وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق امریکہ نے ایرانی ڈاکٹر مجید طاہری کو غیر قانونی پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے کے بے بنیاد الزام میں گرفتار کررکھا تھا جسے امریکہ نے ایران میں قید اپنے شہری مائیکل وائٹ کے بدلے میں رہا کردیا ہے اور ڈاکٹر مجید طاہری رہائی کے بعد وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ایرانی شہریوں اور پارلیمانی امورکے معاون حسین جابری انصاری نے وطن پہنچنے پر ڈاکٹر طاہری کا استقبال کیا ۔ ڈاکٹر مجید طاہری امریکہ ميں 16 ماہ تک قید میں رہے ہیں ۔ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے سید عباس موسوی نے کہا ہے کہ مذاکرات کی ذمہ داری سوئيس حکومت کی تھی اور ایران نے امریکہ کے ساتھ مذاکرات میں براہ راست شرکت نہیں کی۔ انھوں نے کہا کہ امریکہ نے پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے کے  بے بنیاد الزامات میں کچھ ایرانیوں کو گرفتار کررکھا تھا جن کی آزادی کے لئے ایران کی طرف سے سوئیس حکومت نے مذاکرات انجام دیئے اور ایران سوئيس حکومت کے توسط سے باقی ماندہ قیدیوں کی رہائی کے سلسلے میں بھی اپنی کوشش جاری رکھےگا۔

مائیکل وائٹ کا تعلق امریکی بحریہ سے ہے جسے ایران نے جاسوسی اور ایک خصوصی شاکی کی شکایت پر گرفتار کیا تھا۔ ایران کا کہنا ہے کہ مائیکل وائٹ اپنی سزا کی مدت پوری کرچکا تھا اور اسے انسانی اور طبی بنیادوں پر رہا کیا گیا ہے۔

News Code 1900753

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 4 =