امریکی حکومت کے خلاف پر تشدد مظاہروں کا سلسلہ جاری

امریکہ میں سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کے بہیمانہ قتل کے ایک ہفتے بعد بھی پر تشدد مظاہرے جاری ہیں اورامریکی حکومت کے ظلم و تشدد کے خلاف احتجاج کا سلسلہ یورپ تک پھیل گیا ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکہ میں سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کے بہیمانہ قتل کے ایک ہفتے بعد بھی پر تشدد  مظاہرے جاری ہیں اورامریکی حکومت کے ظلم و تشدد کے خلاف احتجاج کا سلسلہ یورپ تک پھیل گیا ہے۔

اطلاعات کے  مطابق پورا امریکہ مشتعل مظاہروں کی لپیٹ میں ہے۔ امریکہ میں شہر شہر احتجاج  ہورہے ہیں اور سفید فام پولیس اہل کار کے ہاتھوں سیاہ فام شخص کے قتل پر مظاہرے پورے ملک میں پھیل گئے ہیں۔ مظاہرین نے مختلف شہروں میں ریلیاں نکالیں جنھیں منتشر کرنے کے لیے  پولیس نے  جب طاقت کا استعمال کیا تو جھڑپیں شروع ہو گئیں۔پولیس کی  جانب  سے آنسو گیس اور  ربڑ کی گولیوں کے استعمال پر مظاہرین  مشتعل ہوگئے اور درجنوں گاڑیوں کو آگ لگا دی۔ مختلف شہروں میں پولیس پر فائرنگ بھی کی گئی۔

پولیس نے وائٹ ہاوس کے باہر جمع پرامن مظاہرین کو آنسو گیس کے ذریعے منتشر کیا اوروائٹ ہاوس کے اطراف علاقہ سیل کر دیا گیا۔ سڑکیں عام ٹریفک کیلئے بند کر دی گئیں۔

ادھر اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹرس نے امریکی انتظامیہ سے مظاہرین کے ساتھ تحمل سے نمٹنے اور واقعے کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

امریکہ میں پولیس اہل کاروں کے ہاتھوں سیاہ فام جارج فلائیڈ کے قتل کے خلاف جاری احتجاج نسل پرستانہ منافرت کے خلاف عالمی ردعمل کی شکل اختیار کرگیا ہے۔ آسٹریلیا اور یورپ میں بھی ڈونلڈ ٹرمپ اور امریکہ میں نسلی منافرت کے واقعات کے خلاف احتجاجی مظاہروں میں بڑی تعداد نے شرکت کی۔ جرمنی کے وزیر خارجہ نے جارج فلائیڈ کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے اس کے خلاف ہونے والے احتجاج کو بالکل جائز قرار دیا۔

چینی وزارت خارجہ نے امریکہ میں نسلی منافرت کو امریکی سماج کا مستقبل عارضہ قرار دیتے ہوئے اس کی مزمت کی ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خآرجہ کے ترجمان  نے امریکہ سے امریکی عوام پر تشدد کو فوری طور پر روکنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی حکومت کو نسل پرستانہ پالیسی کو ترک کردینا چاہیے اور دوسرے ممالک میںم داخلت کے بجائے امریکہ کے اندرونی معاملات کو درست کرنا چاہیے۔

News Code 1900649

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 1 =