امریکی ریاست مینی سوٹا میں تیسرے روز بھی پر تشدد مظاہرے جاری

امریکی ریاست مینی سوٹا میں سیاہ فام شخص کی پولیس کے ہاتھوں بہمیانہ ہلاکت کے خلاف تیسرے روز بھی پر تشدد مظاہرے کیے گئے جس میں مشتعل افراد نے کئی گاڑیوں اور درجنوں املاک کو آگ لگا دی۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی ریاست مینی سوٹا میں سیاہ فام شخص کی پولیس کے ہاتھوں بہمیانہ ہلاکت کے خلاف تیسرے روز بھی پر تشدد مظاہرے کیے گئے جس میں مشتعل افراد نے کئی گاڑیوں اور درجنوں املاک کو آگ لگا دی۔  ریاست مینی سوٹا میں یہ فسادات پولیس کے ہاتھوں 46 سالہ سیاہ فام جورج فلائیڈ کو دن دِہاڑے سڑک پر تشدد کا نشانہ بنا کر ہلاک کرنے پر کیے گئے ۔

مظاہرین نے اس دوران توڑ پھوڑ کی اور دکانوں میں لوٹ مار بھی کی جس پر مقامی پولیس کو شیلنگ کرنا پڑ گئی ، جبکہ فسادات پر قابو پانے کے لیے مینی سوٹا کے گورنر نے نیشنل گارڈز کو بھی طلب کرلیا ہے۔

مظاہرین نے اس موقع پر کہا کہ سفید فام پولیس اہلکاروں کو کھلی چھوٹ حاصل ہے اور وہ سیاہ فاموں کو آج بھی غلاموں کی طرح سڑکوں پر قتل کر رہے ہیں۔

News Code 1900540

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =