ہانگ کانگ خود مختار نہیں رہا/ امریکہ کی اربوں ڈالر کی تجارت خطرے میں پڑ گئی

امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو نے کانگریس کو تصدیق کردی ہے کہ چین کے نافذ کردہ نئے ایکٹ کے بعد اب ہانگ کانگ کی خود مختارحیثیت نہیں رہی، جس کے بعد ہانگ کانگ اور امریکہ کے درمیان اربوں ڈالرز کی تجارت خطرے میں پڑ گئی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ایسوسی ایٹڈ پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو نے کانگریس کو تصدیق کردی ہے کہ چین کے نافذ کردہ نئے ایکٹ کے بعد اب ہانگ کانگ کی خود مختارحیثیت نہیں رہی، جس کے بعد ہانگ کانگ اور امریکہ کے درمیان اربوں ڈالرز کی تجارت خطرے میں پڑ گئی ہے۔ ایک بیان میں مائیک پمپئو نے کہا کہ کوئی بھی سمجھدار شخص زمینی حقائق کو دیکھتے ہوئے اب یہ بات نہیں کرسکتا کہ ہانگ کانگ کو چین سے خود مختار حیثیت حاصل ہے، امریکہ پہلے ہی ہانگ کانگ سے متعلق چین کے فیصلے کو تباہ کن قرار دے چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سینئر امریکی سفیر کہہ چکے ہیں کہ چین کی متعلقہ قانون سازی ہانگ کانگ کی خود مختاری کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگی، امریکہ نے گزشتہ سال ہانگ کانگ کے مظاہرین کے لیے انسانی اور جمہوری حقوق پر ایک قانون پاس کیا تھا۔

مائیک پمپئو کا کہنا ہے کہ اسی قانون کے تحت امریکا کو ہر سال چین سے ہانگ کانگ کی خود مختاری کی تصدیق کرنا ہوتی ہے، ہانگ کانگ کی خود مختاری سے متعلق فیصلہ خوش کن نہیں ہے، اب یہ واضح ہے کہ چین ہانگ کانگ کو اپنے زیر تسلط لارہا ہے۔

News Code 1900510

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 0 =