چين نے اقوام متحدہ میں  امریکہ کو شرمندہ کردیا/ پہلے قرضہ اتارو پھر بات کرو

چين نے عالمی ادارہ صحت کے خلاف امریکی صدر ٹرمپ کے بیانات پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ کو غیر ضروری باتیں کرنے کے بجائے امریکہ کا قرضہ اتارنے پر توجہ مبذول کرنی چاہیے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے میل آن لائن کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چين نے عالمی ادارہ صحت کے خلاف امریکی صدر ٹرمپ کے بیانات پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ کو غیر ضروری باتیں کرنے  کے بجائے امریکہ کا قرضہ اتارنے پر توجہ مبذول کرنی چاہیے۔

میل آن لائن کے مطابق امریکہ اس وقت اقوام متحدہ کا 1ارب ڈالر سے زائد کا مقروض ہے۔ اس کے ذمہ یہ رقم اقوام متحدہ کے ریگولر آپریٹنگ بجٹ اور " پیس کیپنگ آپریشنز" کی مد میں واجب الادا ہے۔ چین نے اب یہ معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھانا شروع کر دیا ہے کہ امریکہ کو یہ کہہ کر شرمندہ کر دیاہے کہ پہلے اپنا یہ قرض تو ادا کر دو۔

گزشتہ روز اقوام متحدہ میں تعینات چینی مندوب نے امریکہ کے ذمہ واجب الادا اس رقم کی طرف اشارہ کیا اور ادائیگی کا مطالبہ کیا۔ اقوام متحدہ میں کسی بھی ملک کی طرف سے یہ غیرمعمولی مطالبہ ہے۔

News Code 1900300

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 1 + 5 =