مسئلہ فلسطین آج بھی  دنیائے اسلام کا پہلا مسئلہ ہے

اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں مسئلہ فلسطین فراموش اور نظر انداز کرنے کی گھناؤنی سازشوں کی ناکامی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ فلسطین دنیائے اسلام کا بدستور پہلا مسئلہ ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں  مسئلہ فلسطین کو فراموش اور نظر انداز کرنے کی گھناؤنی سازشوں کی ناکامی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ فلسطین آج بھی دنیائے اسلام کا پہلا مسئلہ ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ نے کہا کہ 14 مئی 1948 کو عالمی اور اسلامی تاریخ میں ایک دردناک واقعہ اور سیاہ باب کا اضافہ ہوا  اور اس واقعہ کے گہرے اور دردناک  اثرات آج بھی موجود ہیں فلسطینی قوم کو اس کی سرزمین اور گھروں سے نکال کر ان کی جگہ دوسرے ممالک سے لائے گئے  صہیونیوں کو بسایا گيا ، فلسطینی بچوں عورتوں اور مردوں کو  بے رحمی، بے دردی  اور سفاکی کے ساتھ  بہیمانہ طور پر قتل کیا گیا اور فلسطینیوں کا قتل عام اس دن سے لیکر آج تک مسلسل جاری ہے۔ مسلمانوں کے قبل اول پر صہیونیوں نے غاصبانہ قبضہ کرلیا۔ یوم نکبت آج بھی فلسطینی قوم کے لئے درد و غم و رنج کا باعث بنا ہوا ہے ۔

ایرانی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا کہ ایران کا فلسطین کے بارے میں ٹھوس ، ثابت اور واضح مؤقف ہے فلسطین کے مسئلہ کا حل خود فلسطینیوں کے حوالے کرنا چاہیے تاکہ وہ  رفرینڈم اور جمہوری طریقہ سے مسئلہ فلسطین کو حل کرسکیں اور جبر و تشدد کے ذریعہ فلسطین سے باہر نکالے کئے فلسطینی اپنے وطن واپس آئيں اور دوسرے ممالک سے لائے گئے صہونیوں کو ان کے اپنے وطن واپس بھیجا جانا چاہیے۔ مسئلہ فلسطین کو فراموش کرنے اور نظر انداز کرنے کے سلسلے میں تمام گھناؤنی سازشیں ناکام ہوگئی ہیں مسئلہ فلسطین آج بھی عالم اسلام کے پہلے مسئلہ کے طور پر باقی ہے۔  

News Code 1900149

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 6 + 10 =