سری لنکا میں مسلمانوں کی میتوں کو جلایا جارہا ہے

سری لنکا میں مسلمانوں کو اپنے مردوں کو دفنانے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے بلکہ انتظامیہ کورونا وائرس سے ہلاک ہونے کا الزام عائد کرکے میتوں کو جلا رہی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سری لنکا میں مسلمانوں کو اپنے مردوں کو دفنانے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے بلکہ انتظامیہ کورونا وائرس سے ہلاک ہونے کا الزام عائد کرکے میتوں کو جلا رہی ہے۔ اطلاعات کے مطابق سری لنکن دارالحکومت کولمبو میں فاطمہ رنوسا نامی خاتون کا  دوران علاج  انتقال ہوگیا  تاہم طبی عملے نے ان کی موت کی وجہ کورونا قرار دیکر لاش انتظامیہ کے حوالے کردی اور خون نمونے ٹیسٹ کے لیے لیبارٹری بھیج دیئے۔

سری لنکا میں حکومت نے کورونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کو دفنانے کے بجائے لاشیں جلانے کا فیصلہ کیا ہے جس کی وجہ سے انتظامیہ نے ٹیسٹ کا نتیجہ آنے سے پہلے ہی فاطمہ رنوسا کی لاش جلادی لیکن دو روز بعد کورونا ٹیسٹ منفی آگیا جس پر اہل خانہ پھوٹ پھوٹ کر رونے لگے۔

مرحومہ کے بیٹے محمد ساجد نے حکام سے واقعے کا نوٹس لیکر انصاف کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے میڈیا کو بتایا کہ ان کی والدہ کی میت کو اسلامی طریقہ کار کے برخلاف کورونا وائرس کا بہانہ بنا کر جلا دیا گیا تھا اور جب سے ٹیسٹ منفی آنے کا پتہ چلا ہے ہمارا غم دہرا ہوگیا ہے۔

News Code 1900119

لیبلز

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
  • 3 + 2 =